مسلمانوں سے نفرت کی بنیاد پر کینڈا میں پاکستانی نژاد خاندان کے پانچ افراد کو گاڑی سے کچل دیا، چار جاں بحق ایک بچہ شدید زخمی
No image مانٹریال( کشیر رپورٹ)کینیڈا میں مسلمانوں کے خلاف نفرت کی بنیاد پر ایک شخص نے پاکستانی نژاد مسلمان خاندان کو گاڑی سے کچل دیا جس سے ایک ہی خاندان کے چار افراد جاں بحق اور ایک بچہ شدید زخمی ہو گیا۔پولیس نے حملہ آور قاتل کو گرفتا ر کر لیا۔تفصیلات کے مطابق ایک پاکستانی نژاد خاندان کے پانچ افراد کینیڈین صوبے اونٹاریو کے شہر لندن کے ہائیڈ پارک روڈ کے کنارے موجود تھے، جب 20 سالہ ڈرائیور نے کالے رنگ کا پک اپ ٹرک فٹ پاتھ پر چڑھا کر اس خاندان کو نشانہ بنایا۔ واقعے میں 74 سالہ خاتون موقعہ پر ہی جابحق ہوگئی۔ جبکہ 46 سالہ مرد 44 سالہ خاتون او 16 سال کی بچی نے اہسپتال پہنچ کر دم توڑا۔ خاندان کا واحد 9 سال بچہ شدید زخمی حالت میں زیر اعلاج ہے، تاہم اس کی حالت خطرے سے باہر بتائی جا رہی ہے۔لنڈن پولیس کا کہنا ہے کہ باقاعدہ منصوبہ بندی سے مسلمان خاندان کو گاڑی کے نیچے روند کر قتل کیا گیا۔ یہ مسلمانوں سے نفرت پر مبنی جرم ہے۔ واقعے کے ذمہ دار ڈرائیور Nathanial Veltman کو ایک مال کی پارکنگ سے گرفتار کر لیا گیا ہے، جس کے خلاف چار افراد کو منصوبہ بندی سے قتل کرنے اور ایک پر جان لیوا حملہ کرنے کا مقدمہ درج کر لیا گیا ہے۔ لندن پولیس کا کہنا ہے کہ ملزم کے خلاف مقدمے میں دہشت گردی کی دفعات بھی شامل کی جا رہی ہیں۔ لندن شہر کی مسلمان کمیونٹی کے مطابق، نشانہ بننے والا خاندان 14 سال پہلے پاکستان سے کینیڈا منتقل ہوا تھا۔ یہ موسم گرما میں ہر روز شام کو کھانے کے بعد نزدیکی پارک کے فٹ پاتھ پر واک کیا کرتے تھے۔ گزشتہ روز بھی واک کے دوران ہی اںہیں نشانہ بنایا گیا۔ لندن شہر کے مئیر اور کینیڈا کے وزیر اعظم نے اس نفرت انگیز جرم پر سخت رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ لندن شہر اور کنیڈا کے عوام مسلمانوں کے ساتھ کھڑے ہیں۔
واپس کریں