مقبوضہ کشمیر، ریچھ کے حملے میں نوجوان اور لیوپرڈ کے حملے میں نوعمر لڑکی ہلاک
No image سرینگر( کشیر رپورٹ) مقبوضہ کشمیر میں ہندوستانی فوج کی بڑی تعداد اور جنگلوں میں مسلسل فوج سرگرمیوں کی وجہ سے جنگلی جانوروں کی آبادیوں میں داخل ہونے کے واقعات میں اضافہ ہوا ہے۔لائین آف کنٹرول پر ہندوستانی فوج کی طرف سے خار دار تاروں کی باڑ کی وجہ سے جنگلی جانوروں کی نقل و حرکت بھی محدود ہوئی ہے جس سے کئی نایاب نسلوں کے جانور بھی شدید متاثر ہو رہے ہیں۔
انہی دنوں ہی ریچھ اور لیوپرڈ کے حملے میں دو انسانی ہلاکتیں ہوئی ہیں۔گاندربل مقبوضہ کشمیر میں ریچھ کے حملے میں ہلاک ہونے والے نوجوان کی لاش سینتیس دنوں بعد ایک ندی سے ملی ہے۔تفصیلات کے مطابق جاوید احمد نامی نوجوان دو مئی کو ریچھ کے حملے میں اس وقت لاپتہ ہو گیا تھا کہ جب وہ اپنے دو دوستوں کے ہمراہ ندی سے مچھلیاں پکڑ رہا تھا۔ اس کے لاش حملے والے مقام سے آٹھ کلومیٹر دور سے ملی ہے۔یہ واقعہ نارنگ کنگن علاقے میں دومیل کے مقام میں پیش آیا۔ بڈگام ضلع میںایک نابالغ لڑکی لیوپرڈ کے حملے میں ہلاک ہو گئی۔
واپس کریں