الیکشن کمیشن نے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی پر تنویر الیاس اور چودھری شہزاد کو طلب کر لیا، تمام امیدواران کو مکتوب بھی تحریر
No image مظفرآباد( 06جولائی 2021)آزاد کشمیر الیکشن کمیشن نے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی پر ' باغ2 سے امیدوار تنویر الیاس اور مظفر آباد2 سے چودھری شہزاد کو وضاحت کے لئے طلب کر لیا ہے۔ الیکشن کمیشن نے الیکشن میں حصہ لینے والے تمام امیدواران کو ضابطہ اخلاق کی پابندی کے حوالے سے مکتوب بھی تحریر کیا ہے۔
تفصیلات کے مطابق آزاد جموں وکشمیر الیکشن کمیشن کی جانب سے جاری کرہ پریس ریلیز کے مطابق آزادجموں وکشمیر قانون ساز اسمبلی کے عام انتخابات کے لیے سیاسی جماعتوں اور امیدواران کے لیے الیکشن کمیشن کی جانب سے جاری کردہ ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کرنے پر امیدوار اسمبلی حلقہ LA-15 باغ2- وسطی،سردار تنویر الیاس کو ریٹرنگ آفیسر حلقہ وسطی باغ ایل اے 15 نے 07 جولائی 2021 کو دن 11 بجے وضاحت کے لیے طلب کر لیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق مورخہ 05 جولائی 2021 بروز سوموار امیدوار اسمبلی سردار تنویر الیاس کی زیر قیادت ہاڑی گہل تا کفل گڑھ ریلی نکالی گئی جو کہ تقریبا100 کے لگ بھگ مختلف گاڑیوں اور 100 سے زائد موٹر سائیکلز پر مشتمل تھی۔ ریلی میں کچھ گاڑیوں پر باقاعدہ لاوڈ سپیکر ز نصب تھے اور لاوڈ سپیکرز کا آزادانہ استعمال کیا گیا اور نعرہ بازی بھی کی گئی۔الیکشن کمیشن کی جانب سے جاری کردہ ضابطہ اخلاق کے ضابطہ نمبر 4 شق نمبر 32 کی خلاف ورزی کی گئی۔ جس کے تحت گاڑیوں پر لاوڈ سپیکر نصب کر کے کسی بھی امیدوار کو اپنے حق میں انتخابی مہم کی تشہیر /نعرہ بازی کروانے کے علاوہ گاڑیوں، کار اور موٹر سائیکل ریلیز پر پابندی عائد کی گئی ہے۔ ریٹرنگ آفیسر حلقہ وسطی باغ نے امیدوار اسمبلی سردار تنویر الیاس کو ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی پر وضاحت کے لیے مورخہ 07 جولائی 2021 کو بوقت 11:00 بجے دن دفتر ریٹرنگ آفیسر طلب کیاہے۔
آزاد جموں وکشمیر الیکشن کمیشن کی طرف سے الیکشن 2021کے حوالے سے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کرنے پر ضلعی انتظامیہ نے ظہور مغل ریٹائرڈ مدرس، ممتاز مغل ٹرانسپورٹر اور چوہدری محمد شہزاد امیدوار حلقہ نمبر۔2 مظفرآباد کے خلاف FIR درج کر لی ہے۔ تفصیلات کے مطابق مورخہ 4-7-2021کو سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو وائرل ہوئی تھی جس کی نسبت تحقیقات کرنے پر پایا گیا کہ مورخہ02.07.2021 کو موضع ڈنہ مغلاں بمقام دھڑہ پی ٹی آئی ورکرز کا ایک شمولیتی پروگرام / کارنر میٹنگ منعقد ہوئی جس کے منتظمین ظہور مغل ریٹائرڈ مدرس، ممتاز مغل ٹرانسپورٹر تھے، جس میں امیدوار اسمبلی حلقہ نمبر۔2 مظفرآباد چوہدری شہزاد نے شرکت کی۔ جس کی نسبت ضلعی انتظامیہ / تھانہ پولیس کو کسی قسم کی کوئی پیشگی اطلاع یا نوٹس نہ دیا گیا۔ جبکہ آزاد جموں وکشمیر الیکشن کمیشن کی طرف سے الیکشن 2021کے حوالے سے ضابطہ اخلاق جاری شدہ ہے جس کے مطابق اسلحہ کی نمائش پر پابندی عائد ہے جبکہ وائرل ویڈیو میں ورکرز کی جانب سے سرعام اسلحہ ناجائز کی نمائش کرتے ہوئے ہوائی فائرنگ کی گئی جو کہ ضابطہ اخلاق کی سنگین خلاف ورزی ہے۔ جس کی پاداش میں ضلعی انتظامیہ نے ظہور مغل ریٹائرڈ مدرس، ممتاز مغل ٹرانسپورٹر اور چوہدری محمد شہزاد امیدوار حلقہ نمبر۔2 مظفرآباد کے خلاف FIR درج کر لی ہے۔ یہ بات سیکرٹری(ترجمان) آزاد جموں و کشمیر الیکشن کمیشن کی جانب سے جاری کر دہ پریس ریلیز میں بتائی گئی ہے۔
آزادجموں وکشمیر الیکشن کمیشن نے انتخابات میں حصہ لینے والی سیاسی جماعتوں کے قائدین اور امیدواروں کو الیکشن کمیشن کی جانب سے جاری کردہ ضابطہ اخلاق کی پابندی کرنے کی ہدایت کی ہے۔ الیکشن کمیشن کے ترجمان کے مطابق آزاد جموں و کشمیر الیکشن کمیشن نے قانون ساز اسمبلی کے عام انتخابات منعقدہ 25جولائی 2021 کے لیے سیاسی جماعتوں اور امیدواران کے لیے ضابطہ اخلاق جاری کر رکھا ہے جس کی پابندی تمام سیاسی جماعتوں اور امیدواران پر لازم ہے لیکن الیکشن کمیشن کو یہ شکایات موصول ہو رہی ہیں کہ بعض امیدواران کی جانب سے ضابطہ اخلاق کی پابندی نہیں کی جارہی اور وہ خود اور ان کے کارکن صریحا ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کے مرتکب ہو رہے ہیں۔اس سلسلہ میں آزاد جموں وکشمیر الیکشن کمیشن نے انتخابات میں حصہ لینے والے جملہ امیدواران کو مکتوب تحریر کرتے ہوئے ہدایت کی ہے کہ جملہ امیدواران الیکشن کمیشن کی جانب سے جاری کردہ ضابطہ اخلاق کی من و عن پابندی کریں۔ کسی بھی امیدوار کی انتخابی مہم کے دوران کسی طرف سے منعقدہ میٹنگ یا دیگر کسی بھی مقام پر مذکورامیدوار کے کسی کارکن رہنما، حمایتی یا مہمان کی طرف سے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کی گئی تو وہ امیدوار کی طرف سے خلاف ورزی باور کی جائے گی اور اس کی پاداش میں مذکورہ امیدوار کے خلاف تحت ضابطہ کارروائی عمل میں لائی جائے گی جو کہ متعلقہ امیدوار کی نااہلی پر بھی منتج ہو سکتی ہے۔ لہذا ممکنہ نااہلی سے بچنے کے لیے تمام امیدواران کو ہدایت کی جاتی ہے کہ اپنی انتخابی مہم کے دوران نہ صرف خود ضابطہ اخلاق کی مکمل پابندی کریں بلکہ اپنی انتخابی مہم میں شریک کارکنان، حمایتی اور پاکستان سے تشریف لانے والے سیاسی عمائدین اور حکومتی شخصیات کو بھی اس امر کا پابند بنائیں تاکہ ممکنہ کارروائی سے محفوظ رہ سکیں۔ اسی طرح آزاد کشمیر کی سیاسی جماعتوں کے قائدین کو بھی مکتوب تحریر کرتے ہوئے ہدایت کی گئی ہے کہ وہ آزاد جموں وکشمیر قانون ساز اسمبلی کے عام انتخابات 2021کے لیے آزاد جموں وکشمیر الیکشن کمیشن کی جانب سے جاری شدہ ضابطہ اخلاق کی خود بھی پابندی کریں اور اپنی جماعت کے امیدواران سے بھی پابندی کروائیں علاوہ ازیں پاکستان سے سیاسی جماعتوں کے آنے والے نمائندگان وعمائدین انتخابی مہم کے دوران ضابطہ اخلاق کی مکمل پابندی کریں اور جلسہ کے دوران کسی قسم کے اعلانات نہ کیئے جائیں۔ پاکستان سے آنے والے بعض سیاسی نمائندگان، عمائدین اپنے جلسوں کے دوران نہ صرف منصوبہ جات کے اعلانات کرنے سے پرہیز کریں بلکہ جلسوں کے دوران ایسی ناشائستہ زبان استعمال نہ کریں جس سے امن وامان کی صورتحال خراب ہونے کا احتمال ہو۔ لہذا جملہ سیاسی جماعتوں کے سربراہان کو پابند کیا جاتا ہے کہ وہ اپنی جماعت کے پاکستان سے آنے والے نمائندگان، عمائدین کوبھی پابند کریں کہ وہ الیکشن کمیشن کی جانب سے جاری کردہ ضابطہ اخلاق کی پابندی کو یقینی بنائیں اور اپنے جلسوں کے دوران ایک دوسرے کے خلاف ناشائستہ زبان کے استعمال سے پرہیز کریں۔ اگر کسی بھی سیاسی جماعت کی حمایت میں پاکستان سے آنے والے سیاسی نمائندگان و عمائدین کمیشن ہذا کی جانب سے جاری کردہ ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی میں کوئی بھی عمل کیا گیا تووہ مذکورہ جماعت اور اس کے امیدوار کی طرف سے خلاف ورزی تصور کی جائے گی اور اس کی نسبت مطابق ضابطہ کارروائی عمل میں لائی جائے گی جو مذکورہ جماعت یا امیدوار کی نااہلی پر منتج ہو سکتی ہے۔
واپس کریں