مقبوضہ کشمیر میں پھنسی ہوئی آزاد کشمیر ،پاکستان کی خواتین کا معاملہ،JKCHRنے مسئلہ اقوام متحدہ کے ہیومن رائٹس کونسل میں پیش کر دیا
No image لندن ( کشیر رپورٹ) ہندوستانی مقبوضہ کشمیر میں موجود پاکستانی خواتین کی واپسی کا معاملہ اقوام متحدہ میں پہنچ گیا۔ اقوام متحدہ نے ہندوستانی زیر انتظام ( مقبوضہ ) کشمیر میں پھنسی آزاد کشمیر اور پاکستان سے گئی خواتین کی حالت زار پر جموں وکشمیر کونسل فار ہیومن رائٹس کی رپورٹ( دستاویز) جار ی کر دی ہیں۔یہ دستاویز اقوام متحدہ کے ہیومن رائٹس کونسل کی ویب سائٹ پہ زیر نمبر(Dated 8September2021۔A/HRC/48/NGO/120)دیکھی جا سکتی ہیں۔جموں وکشمیر کونسل فار ہیومن رائٹس کے چیئر مین ڈاکٹر سید نزیر گیلانی نے بتایا کہ ہندوستانی زیر انتظام( مقبوضہ) جموں وکشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کا سلسلہ نہایت خطرناک صورتحال کی عکاسی کرتا ہے اور ۔جموں وکشمیر کونسل فار ہیومن رائٹس1990سے مقبوضہ کشمیر میں ہونے والی انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کا اقوام متحدہ میں اٹھا رہی ہے اور یہ اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کونسل کے ریکارڈ کا حصہ ہیں۔ڈاکٹر سید نذیر گیلانی نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں آزاد کشمیر اور پاکستان کی پھنسی ہوئی خواتین اور بچوں کا معاملہ بہت اہمیت کا حامل ہے۔انہوں نے کہا کہ ان کو واپسی کا حق دلانے کے لئے جموں وکشمیر کونسل فار ہیومن رائٹس نے یہ معاملہ اقوام متحدہ کے ہیومن رائٹس کونسل میں پیش کر دیا ہے۔مقبوضہ کشمیر میں پھنسی ہوئی ان خواتین نے مقبوضہ کشمیر میں کئی بار احتجاجی مظاہرے کرتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ انہیں آزاد کشمیر ،پاکستان میں اپنے والدین،رشتہ داروں سے ملنے کا حق دیا جائے۔
واپس کریں