میر پور3 اور کوٹلی5 کے ضمنی الیکشن کی صورتحال ۔ خصوصی رپورٹ
No image میر پور 13ستمبر2021( کشیر رپورٹ) آزاد کشمیر الیکشن کمیشن نے میر پور اور کوٹلی کے دو حلقوں ایل اے 3میر پور3 اورایل اے 12کوٹلی 5 کے ضمنی الیکشن10اکتوبر کرانے کا اعلان کیا ہے۔میر پور کی اسمبلی سیٹ بیرسٹر سلطان محمود کے صدر آزاد کشمیر بننے اور کوٹلی کی چودھری یاسین کی طرف سے دو حلقوں سے کامیابی پر ایک نشست چھوڑنے کی وجہ سے خالی ہوئی ہیں۔میر پور 3اورکوٹلی 5 میں ضمنی الیکشن کے حوالے سے ہم 25جولائی 2021کو ہونے والے اسمبلی الیکشن کے نتائج ،صورتحال کا جائزہ لیتے ہیں۔

ہفت روزہ '' کشیر '' کی خصوصی رپورٹ کے مطابق 25جولائی2021کو ہونے والے آزاد جموں وکشمیر قانون ساز اسمبلی کے انتخابات میں ایل اے 3میر پور3 میں کل23امیدوار وں کے درمیان مقابلہ ہوا ، ان میں سے 12امیدوارمختلف سیاسی جماعتوں سے جبکہ 11آزاد امیدوار تھے۔ایل اے 3میر پور 3میں میر پور تحصیل کے پٹوار سرکل خانپور،کھڑک،رٹھوعہ محمد علی،تھوتھال،سنگوٹ،میر پور میونسپل ایریا،سیکٹر اے،سیکٹر بی،سیکٹر سی،سیکٹر ڈی ،سیکٹر ای،سیکٹر ایف نیو سٹی میر پور کے علاقے شامل ہیں۔

اس حلقے میں پولنگ سٹیشن تعداد 147 اورحلقے میں کل ووٹوں کی تعداد 85917 ہے جس میں سے گزشتہ الیکشن میں43364 ووٹ پول ہوئے۔پی ٹی آئی کے بیرسٹر سلطان محمود چودھری 18703 ووٹ لے کر کامیاب قرار دیئے گئے تھے جبکہ پی ایم ایل این کے چودھری محمد سعیدنے 15556 ووٹ حاصل کئے تھے۔اس کے علاوہ ٹی ایل پی کے عمیر اصغرنے 5731، پی پی پی کے چودھری محمد اشرف نے 1384، جماعت اسلامی کے ذوالقرنین بٹ نے 432 اورمسلم کانفرنس کے شہزادہ اقبال نے 361 ووٹ حاصل کئے۔ آزاد امیدوار قابل ذکر ووٹ حاصل نہ کر سکے۔

25جولائی2021 کے اس نتیجے کے مطابق میر پور 3کے حلقے میں بیرسٹر سلطان محمود چودھری 3147ووٹوں کی سبقت سے کامیاب ہوئے۔جبکہ چار جماعتوں کے امیدواروں نے کل 7908ووٹ حاصل کئے۔2016کے الیکشن میں اس حلقے سے چودھری محمد سعید نے بیرسٹر سلطان محمود کو شکست دی تھی۔اب چودھری سعید کا ووٹوں کا فرق تقریبا تین ہزار ہے ، چار جماعتوں کے امیدواروں کے ووٹ آٹھ ہزار کے قریب ہیں۔

10اکتوبر2021کے ضمنی الیکشن میں مسلم لیگ (ن) کی طرف سے چودھری محمد سعید ہی امیدوار ہیں جبکہ پی ٹی آئی کی طرف سے بیرسٹر سلطان محمود چودھری کے فرزند چودھری یاسر سلطان امیدوار ہوں گے۔ا اس حلقے کے ضمنی الیکشن میں تحریک لبیک پاکستان اورپیپلز پارٹی کے ووٹ کافی اہمیت اختیار کر گئے ہیں۔ یہ ووٹ مسلم لیگ (ن) یا پی ٹی آئی کے امیدوار کو فیصلہ کن سبقت دلا سکتے ہیں۔

اب ہم 10اکتوبر2021کو ایل اے 12کوٹلی 5میں ہونے والے ضمنی الیکشن کی صورتحال کا جائزہ لیتے ہیں۔ایل اے 12کوٹلی5میں کل ووٹ 106428ہیں جس میں سے گزشتہ الیکشن میں68569 ووٹ پول ہوئے تھے۔پولنگ سٹیشن کی تعداد 198۔کل 18امیدوار، جن میں سے نصف آزاد امیدوارتھے۔ یہاں بھی آزاد امیدواروں میں سے جس نے سب سے زیادہ ووٹ لئے اس کی تعداد 55رہی، یعنی آزاد امیدوار کا رجحان نہ ہونے کے برابر رہا۔ایل اے 12کوٹلی 5میں چڑھوئی تحصیل کے پٹوار سرکل سہلنان ،پنجیاں ،براٹلا،نارڈڈیالاں،تھروچی،چاولا،چڑھوئی، کجلانی،خرواس،کوٹیرہ خانقاہ،جولیاں جاٹاں کی مکمل تحصیل ،ڈنہ، کھوئی رٹہ تحصیل کا پٹوار سرکل ٹائیں کے علاقے شامل ہیں۔

ایل اے 12کوٹلی 5 کے گزشتہ الیکشن کے نتائج بہت دلچسپ ہیں کہ اس میں کامیاب امیدوار بہت کم ووٹوں کی سبقت سے جیتے اورچار جماعتوں کے امیدواروں نے تقریباپچیس ہزار سے زائد ووٹ حاصل کئے۔اس حلقے میںپیپلز پارٹی کے چودھری محمد یاسین 21527 کامیاب ہوئے تھے۔مسلم لیگ (ن) کے محمد ریاست خان نے 20081 ووٹ حاصل کئے تھے۔ یوں چودھری یاسین محض 1446ووٹوں کی سبقت سے کامیاب ہوئے تھے۔پی ٹی آئی کے شوکت فرید نے 17525، ٹی ایل پی کے ارشد محمود نے 4365، مسلم کانفرنس کے نعیم منصب داد خان نے 3153 ، جماعت اسلامی کے غفارت شاہد نے772، جموں کشمیر پیپلز پارٹی کے بشارت حسین نے 203 اور جمو ں کشمیر لبریشن لیگ کے محمد شہر یار ظفر نے 7 ووٹ حاصل کئے تھے۔

اس حلقے سے مسلم لیگ (ن) کی طرف سے محمد ریاست خان ہی امیدوار ہیں جبکہ چودھری محمد یاسین کے فرزند عامر یاسین پی پی پی کے امیدوار ہوں گے۔ یوں اس حلقے میں10اکتوبر 2021کے ضمنی الیکشن میں دلچسپ اور سنسنی خیز صورتحال متوقع ہے۔کامیاب امیدوار کی کم سبقت اور تین دیگر جماعتوں کے امیدواروں کے مجموعی تقریبا پچیس ہزار ووٹ نہایت اہم ہیں اور مسلم لیگ (ن) یا پیپلز پارٹی کے امیدوار کو فیصلہ کن سبقت دلا سکتے ہیں۔یا یہ دیگر جماعتوں کے امیدوار الیکشن لڑتے ہوئے کسی امیدوار کو نقصان سے دوچار کر سکتے ہیں۔
واپس کریں