شاردہ مندر جانے کے خواہشمند ہندو یاتری گروپ کا ٹیٹوال کا دورہ ، منقسم کشمیری خاندانوں کے لئے بس سروس کی بحالی کا معاملہ
No image سرینگر( کشیر رپورٹ) مقبوضہ کشمیر اور آزاد کشمیر کے درمیان وادی نیلم میں لائین آف کنٹرول پر واقع ٹیٹوال میں ہندو زائرین کے ایک گروپ نے دورہ کرتے ہوئے مطالبہ کیا کہ جموں وکشمیر کے درمیان تمام تاریخی ،روایتی راستے کھولے جائیں اور کشمیر کے دونوں حصوں میں مذہبی دوروں کی بھی اجازت دی جائے۔ یہ ہندو گروپ وادی نیلم کے شاردہ مقام پہ واقع شاردہ مندر کا دورہ کرنا چاہتا ہے۔اس موقع پر ٹیٹوال میں آزاد کشمیر کی طرف سے کافی لوگ کھڑے ہو کر انہیں دیکھتے رہے۔
سرینگر مظفر آباد بس سروس جو منقسم کشمیری خاندانوں کے لئے تھی وہ ہندوستان نے2019 میں بند کرا دی تھی۔منقسم کشمیری خاندان تو آنے جانے میں مزید سہولیات دینے کا مطالبہ کر رہے تھے،لیکن منقسم کشمیری خاندانوں کو آنے جانے میں مزید سہولیات دینے کے بجائے آنے جانے کا یہ سلسلہ ہی بند کر دیا گیا۔ کشمیر کے دونوں طرف مذہبی دورے بھی اچھی بات ہے تاہم سب سے پہلے کشمیر کے منقسم خاندانوں کے افراد کو اپنے ہی وطن میں آنے جانے کا حق بحال کیا جا نا چاہئے۔
واپس کریں