کشمیری نیویارک میں جنرل اسمبلی سے نریندرمودی کی تقریر کے دوران اقوام متحدہ کی عمارت کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کریں گے
No image نیویارک( کشیر رپورٹ)اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کی تقریر کے دوران 25ستمبر بروز ہفتہ نیویارک میں اقوام متحدہ کی عمارت کے باہر احتجاجی مظاہرہ کیا جائے گا۔یہ احتجاجی مظاہرہ امریکہ میں قائم 'ورلڈ کشمیر ایوئیر نس فوم ' کے زیر اہتمام اور یو ایس کونسل آف مسلم آرگنائزیشنز (یو ایس سی ایم او)، مجلس الشوری نیویارک ، اسلامک سرکل آف نارتھ امریکہ اور کونسل فار سوشل جسٹس کے تعاون سے کیا جائے گا۔
مظاہرین بھارت کی طرف سے مقبوضہ جموں و کشمیر پر فوجی قبضہ فوری طور پر ختم کرنے ، تمام سیاسی قیدیوں کی رہائی اور مقبوضہ علاقے میں مواصلات اور انٹرنیٹ رابطے کی بحالی کے لیے اقوام متحدہ کی مداخلت کا مطالبہ کریں گے۔ ورلڈ کشمیر ایوائیر نس فوم کی طرف سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل نے کشمیریوں کے پیدائشی حق ، حق خود ارادیت کے حوالے سے کئی قرار دادیں منظور کر رکھی ہیں جن آج تک عملدر آمد نہیں ہوا اور جموں وکشمیر تاحال بھارت کے غیر قانونی قبضے میں ہے ۔ بیان میں کہا گیا کہ نریندر مودی حکومت نے مقبوضہ علاقے کی خصوصی حیثیت بھی چھین لی اور علاقہ تباہی اور نسل کشی کے دہانے پر ہے۔ مقبوضہ علاقہ اس وقت تباہ کن انسانی بحران کا سامنا کر رہا ہے اور مودی حکومت کی طرف سے گزشتہ دو برس سے زائد عرصے سے مسلط کردہ فوجی محاصرے، جبری آبادیاتی تبدیلیوں اورمواصلاتی بلیک آو ٹ کی وجہ سے حالات مزید خراب ہوئے ہیں۔ مقبوضہ علاقے کی معیشت ، تعلیم ، صحت کی دیکھ بھال کا نظام اور روز مرہ نظام زندگی مفلوج ہو چکاہے۔ احتجاج میں تارکین وطن کشمیری ، پاکستانی اور انکے حامی بڑی تعداد میں شرکت کریں گے۔
واپس کریں