امریکہ اور چین اقتصادی کشمکش کے بعد فوجی مقابلے کی صورتحال میں
No image بیجنگ( کشیر رپورٹ) چین اور امریکہ کے درمیان اقتصادی کشمکش اب دنیا بھر میں دونوں ملکوں کے درمیان فوجی مقابلے کی صورتحال بھی پیدا کر رہی ہے۔ چین اب حقیقی معنوں میں دنیا کے کئی خطوں میں امن و امان کے حوالے سے امریکہ کو چیلنج کر رہا ہے۔ امریکی دفاعی ادارے '' پینٹاگان'' کا کہنا ہے کہ امریکی کوسٹ گارڈ نے الا سکا کے قریب گزشتہ ماہ الیوٹین جزائر کے قریب چین کے چار جہازو دیکھے گئے جن میں ایک جدید ڈسٹرائر بھی شامل تھا۔امریکی کوسٹ گارڈ نے اپنے جہاز سے چین کے جہازوں کی تصویر بھی بنائی جو '' پینٹاگان'' کی ویب سائٹ پہ اس کی اطلاع کے ساتھ لگائی گئی ہے۔چین کے الاسکا کے سمندری علاقے میں 2015 سے فوجی آپریشن شروع کئے ہیں۔اس کے ساتھ ہی جاپان کے ارد گرد کے سمندری علاقوں میں بھی چین کی فوج کی نقل و حرکت میں اضافہ ہوا ہے۔ امریکہ جاپان، آسٹریلیا اور ہندوستان کی مدد سے اس سمندری خطے میں چین کو گھیرنے کی حکمت عملی اپنائے ہوئے ہے تاہم چین نے اس حوالے سے ابھی تک کوئی دبائو قبول نہیں کیا ہے۔چین کی تیزی سے ترقی کرتی دفاعی صنعت امریکہ کے لئے پریشانی کا باعث ہے کیونکہ اب چین جدید ترین جنگی طیاروں ،ڈرونز اور جدید سہولیات سے آراستہ میزائلوں میں بھی امریکہ کو چیلنج کر رہا ہے۔ چین کے پاس دنیا کی سب سے بڑی فوج ہے ، جس میں 2 ملین سے زیادہ فعال اہلکار ہیں۔
واپس کریں