مقبوضہ کشمیر، کولگام سے اغوا شدہ ہندوستانی فوجی کی لاش برآمد، کپواڑہ میں مقامی طور پر بنائے تین بم برآمد، فوج نے متعدد افراد کو گرفتار کر لیا
No image سرینگر ، 22 ستمبر(کشیر رپورٹ)جنوبی کشمیر کے ضلع کولگام کے محمد پورہ گائوں کے ایک باغ میں بدھ کو ہندوستانی فوج کے ایک سپاہی کی پرانی لاش برآمد ہوئی جسے کشمیر کے آزادی پسند مسلح مزاحمت کاروں نے اپنی حراست میں لیا تھا۔پولیس کے مطابق ہندوستانی فوجی کی لاش ایک باغ سے برآمد ہوئی ،لاش گل سڑ چکی تھی اور صرف اس کی کھوپڑی کے ساتھ گوشت باقی تھا۔ شاکر منظور بھارتی فوج کی ٹیریٹوریل آرمی یونٹ کی 162 بٹالین کے ساتھ 2 اگست 2020 کو عید منانے کے لیے رشی پورہ شوپیاں میں گھر آیا تھا۔ وہ اپنی گاڑی میں واپس قریبی آرمی کیمپ جا رہا تھا جہاں وہ لاپتہ ہونے پر تعینات تھا۔اگلے دن جاری ہونے والے ایک سرکاری بیان میں کہا گیا کہ شاکر کی جلی ہوئی گاڑی پڑوسی ضلع کولگام میں ملی ہے: یہ شبہ تھا کہ فوجی کو عسکریت پسندوں نے اغوا کیا تھا۔
دوسری طرف کپواڑہ کے کرال پورہ علاقے میں فوج نے تلاشی آپریشن کے دوران بالائی علاقے میں ایک جھونپڑی سے تین کلو یوریا اور مقامی طور پر بنائے گئے امپروائزڈ ایکسپلوسیو ڈیوائسز (آئی ای ڈی)برآمد کرنے کا دعوی کیا ہے۔ فوج نے اس الزام میں متعدد افراد کو گرفتار بھی کیا ہے۔
واپس کریں