نئے چین کی طاقت سے امریکا آگاہ نہیں، امریکہ چین کو دھمکا نہیں سکتا، صدر شی جن پنگ کا جنگ کوریا کی یادگاری تقریب سے خطاب
No image بیجنگ۔ چین کے صدر شی جن پنگ نے کہا ہے کہ امریکہ نئے چین کی طاقت سے آگاہ نہیں ہے،چین کے صدر نے 1950 سے 1953تک لڑی جانے والی جزیرہ نما کوریا کی جنگ میں چین کی فتح کی سترہویں سالگرہ کے موقع پر منعقدہ تقریب سے چین کی عسکری طاقت سے متعلق ایک طویل تقریر کی اور امریکہ کو متنبہ کیا کہ وہ چین کی جنگی طاقت سے بے خبر ہے۔انہوں نے کہا کہ چین نے ستر سال پہلے کوریا کی جنگ میں یہ ثابت کیا تھا کہ چین کسی بھی چیلنج کا مقابلہ کرنے کو ہر وقت تیار ہے۔انہوں نے کہا کہ چین ایک بڑی قوت کا ملک ہے اور اسے امریکی دھمکیوں سے ڈرایا دھمکایا نہیں جا سکتا۔صدر شی جن پنگ نے کہا کہ چینی عوام مسائل پیدا کرنے کے حامی نہیں ہیں اور نہ ہی کسی مشکل وقت کا سامنا کرنے سے گبھراتے ہیں۔ انہوں مزید کہا کہ چینی لوگ اور حکومت بیکار نہیں رہتے اور یہ ہمہ وقت اپنی جغرافیائی خود مختاری پر نگاہ رکھے ہوئے ہے تا کہ کوئی اسے نقصان اپہنچانے کی کوشش میں تو نہیں ہے۔
واضح رہے کہ کوریائی جنگ واحد ایک مثال ہے جب امریکی اور چینی فوجیں آمنے سامنے ہو کر ایک خونی جنگ میں شریک ہوئی تھیں۔ یہ جنگ بظاہر کسی منطقی نتیجے کے بغیر ہی ختم ہو گئی تھی لیکن اس صور حال کو چینی حکومت نے ایک 'فتح کے طور پر لیا تھا۔ اس جنگ میں ہلاک ہونے والے امریکی فوجیوں کی تعداد ساڑھے چھتیس ہزار سے زائد تھی جب کہ جنوبی کوریا کے ایک لاکھ سینتیس ہزار فوجی مارے گئے تھے۔ یہ بات ضرور دیکھی گئی کہ شمالی کوریا اور چینی افواج نے امریکی کی قیادت میں اقوام متحدہ کی فوج کو پیچھے سرحد تک پسپا ہونے پر مجبور کر دیا تھا۔
واپس کریں