بزدل ہندستانی فوج جان بوجھ کر سول آبادی کو نشانہ بناتی ہے،وزیر اعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر خان
No image مظفرآباد۔وزیر اعظم آزادجموں وکشمیر راجہ محمد فاروق حیدرخان نے کہا ہے کہ ہندوستان کا مقصد ہے کہ لائن آف کنٹرول پر پاک فوج اکیلی ہو جائے ایسا کبھی نہیں ہو گا۔پاک فوج کے بھرپور جواب کے بعد دشمن کی گنیں خاموش ہوئیں ۔لائن آف کنٹرول پر بسنے والے لوگوں کی جرات اور اور استقامت کو سلام پیش کرتے ہیں ۔ہندوستان نے یورپی ملک سے 5 ہزار سنائیپر گنز خریدی ہیں جو وہ لائن آف کنٹرول پر استعمال کررہا ہے۔سیز فائر لائن پر بسنے والے دلیر غیور لوگوں نے گھر بار چھوڑنے سے انکار کردیا ہے۔ دنیا کی کوئی فوج اکیلے نہیں لڑ سکتی جب تک عوام ساتھ نہ ہوں ۔ اقوام متحدہ کے چارٹر کے تحت کشمیریوں کو حق حاصل ہے کہ ہم ہندوستان کے خلاف مزاحمت کریں ۔امن پسند اور پڑوسی ممالک کی ذمہ داری ہے کہ وہ کشمیریوں کی سپورٹ کریں یا ہندوستان پر دبا بڑھائیں کہ وہ کشمیریوں کو ان کا حق دے ۔ آزادکشمیر کی جملہ سیاسی قیادت کو دعوت دیتا ہوں کہ آزمائش کی اس گھڑی میں اتحاد و اتفاق کا مظاہرہ کریں۔ وزیر اعظم پاکستان اپنی باتوں کو عملی جامہ پہنائیں۔ کپواڑا میں مجاہدین کے ساتھ جھڑپ کے بعد بھارت نے کنٹرول لائن پر گولہ باری کی ،حکومت پاکستان اس معاملہ پر سنجیدگی سے غور کرے ۔لائن آف کنٹرول کے عوام جس عزم اور جرات کے ساتھ دشمن کے سامنے کھڑے ہیں اس پر سلام پیش کرتا ہوں۔ان کی قربانی کا صلہ کوئی نہیں دے سکتا۔ افواج پاکستان نے بھارتی جارحیت کا منہ توڑ جواب دیا، اپنی افوا ج پاکستان پر پورا بھروسہ ہے ۔ متاثرین کے نقصانات کے ازالے کے حوالہ سے حکومت آزادکشمیر اپنی ذمہ داریاں پوری کریگی ۔ گزشتہ روز آزادکشمیر کے ضلع نیلم ، جہلم ویلی ، مظفرآباد ، حویلی ، پونچھ میں بلا اشتعال ہندوستانی فائرنگ سے کل چھ افراد شہید، 45زخمی اور30مکانات مکمل تباہ ،78مال مویشیوں کو نشانہ بنا یا گیا اور152مکانوں کو جزوی نقصان پہنچا۔ حکومت پاکستان وزارت خارجہ سفارتی محاذ پر معاملے کو جارحانہ انداز میں اٹھاے۔ چھ لاکھ دس ہزار لوگ ایل او سی پر رہتے ہیں۔پاک فوج پر پورا یقین ہے آزادکشمیر کے انچ انچ کے دفاع کی مکمل صلاحیت رکھتی ہے۔ہندوستان مقامی آبادی پر بھاری توپخانے کلسٹر ایمونیشن استعمال کرکہ بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی کررہا ہے۔
ان خیالات کا اظہار انہوں نے ہفتہ کے روز ایوان وزیر اعظم میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔وزیر اعظم نے کہا کہ نیلم میں پانچ افراد شہید ،28زخمی،14مکانات تباہ ہوئے54کو جزوی نقصا ن پہنچا،28مال مویشی ہلاک ہوئے ، 3دوکانوںاور2گیسٹ ہاسز کو نقصان پہنچا۔ ،حویلی میں ایک شخص شہید دو زخمی اور12مکان مکمل تباہ ہوئے جبکہ19مکانوں کو جزوی نقصان پہنچا ۔جہلم ویلی میں چھ افراد زخمی ، 4مکان مکمل تباہ،60مکانوں کو جزوی نقصان پہنچا اور 15مال مویشیوں سمیت دو گاڑیوں اور دوکانوں کا نقصان ہوا۔ضلع بھمبر میں 5زخمی اور7مکانوں کو جزوی نقصان پہنچااور15مال مویشی ہلاک ہوئے ۔ضلع مظفرآبادچار افراد زخمی ہوئے 9مکانوں کو جزوی نقصان پہنچا اور تین مال مویشی ہلاک ہوئے۔اس سال یکم جنوری سے اب تک سیز فائر لائن پر بھارتی فوج کی اشتعال انگیزی سے 30لوگ شہید اور288زخمی ہو چکے ہیں۔حکومت پاکستان ہندوستانی فائرنگ کے معاملے پر سنجیدگی سے غور کرے کہ ہندوستان کی اس حرکت کے پیچھے کوئی اور سازش تو نہیں ۔گزشتہ برس ہندوستان نے رات کے اندھیرے میں بالاکوٹ میں درختوں کو نشانہ بنایا جس کا جواب میں افواج پاکستان ، پاک فضائیہ کے دن کی روشنی میں دیا اور پوری دنیا نے دیکھ کہ کس طرح بھارتی جنگی جنون مٹی میں مل گیا ۔وزیر اعظم نے کہاکہ اتحاد و اتفاق میں برکت اور طاقت ہے ، آزادکشمیر کے جملہ سیاسی قائدین کو دعوت دیتا ہوں کہ آزمائش کی اس مشکل گھڑی میں اکھٹے ہو ہندوستان کو جواب دیں۔انہوں نے کہاکہ حکومت پاکستان کی ذمہ داری ہے کہ بھارتی اشتعال انگیزی کو دنیا بھر کے تمام فورمز پر اٹھائے ، اس معاملے کو پارلیمنٹ میں لایا جائے ۔ انہوں نے کہاکہ ایل او سی پر آباد شہریوں کی حفاظت کیلئے بنکرز کی تعمیر افواج پاکستان کے ساتھ ملکر کررہے ہیں اور اب تک11کروڑ17لاکھ روپے ریلیز ہو چکے ہیں اور اس میں سے حکومت آزادکشمیر نے3کروڑ اپنے بجٹ سے دیے ہیں، سیز فائر لائن پر بنکرز کی تعمیر کا کام جاری ہے۔ سیز فائر لائن کے قریب ہسپتال فعال ہیں ۔ سیز فائر لائن کے علاقوں فرسٹ ایڈ پوسٹیں بنا رہے ہیں تاکہ زخمی کو فوری طور پر ابتدائی طبی مدد فراہم کی جا سکے۔ انہوں نے کہاکہ افواج پاکستان پر پورا بھروسہ ہے کہ ہے وہ دفاع وطن کی بھرپور صلاحیت رکھتی ہے ۔ہندوستانی فوج ہماری افواج پاکستان کا مقابلہ نہیں کر سکتی۔ اپنی فوج پر پورا بھروسہ ہے جس نے ہندوستان کو منہ توڑ جواب دیا۔ پاک فوج وطن کے چپے چپے کی حفاظت کیلئے قربانیاں دے رہی ہیں۔ہندوستان کی فوج بزدل ہے جو سول آبادی کو نشانہ بناتی ہے ۔

واپس کریں