جب تک آزاد کشمیر موجود ہے مسئلہ کشمیر کوئی ختم نہیں کرسکتا،وزیر اعظم راجہ فاروق حیدر خان
No image مظفر آباد۔ وزیر اعظم آزاد جموں وکشمیر راجہ محمد فاروق حیدر خان نے کہا ہے کہ سیکورٹی کونسل مفادات کا ٹولہ ہے اس سے کشمیریوں کو کچھ نہیں ملنے والا،ہمیں اپنی حیثیت کو دنیا میں منوانا ہوگا تاکہ دنیا ہماری بات توجہ سے سنے۔آنے والا وقت فیصلہ کریگا کہ گلگت بلتستان کو صوبہ بنانے کا اقدام پاکستان کے مفاد میں تھا یا نہیں، جب تک آزاد کشمیر موجود ہے مسئلہ کشمیر کوئی ختم نہیں کرسکتا،ریاست پاکستان کے ساتھ کشمیریوں نے ہمیشہ وفا کی ہے اور کرتے رہیں گے، لائن آف کنٹرول پر ہندوستانی فائرنگ گولہ باری سے شہید ہونے والے تمام افراد کے اہلخانہ کی کفالت حکومت آزاد کریگی، انکو ماہانہ 3 ہزار روپے فی کس وظائف دیے جائیں گے یہ رقم حکومت آزاد کشمیر اپنے بجٹ سے دیگی اسکا حکومت پاکستان کے پیکیج سے کوئی تعلق نہیں۔
وزیر اعظم راجہ فاروق حیدر خان نے ٹی وی جنرنلسٹس ایسوسی ایشن آزاد کشمیر کے نومنتخب عہدیداران سے حلف لینے کے بعد منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان کی جانب سے کی جانے والی جارحیت کو کوریج دینی چاہیے تاکہ دنیا ہندوستان کا اصل چہرہ دیکھ سکے اور پاکستان کے عوام بھی بھارتی ظلم و بربریت دیکھ سکیں۔میڈیا کا کردار انتہائی اہم اس شعبہ سے وابستہ لوگوں کو انتہائی ذمہ دار ہونا چاہیے،آزاد میڈیا انتہائی ناگزیر ہے تاکہ لوگوں تک درست انفارمیشن پہنچے، میڈیا میرا محاسبہ کرے تو مجھے خوشی ہوتی ہے،کسی کا ذاتی مخالف نہیں لیکن کسی قسم کا ڈھونگ ڈرامہ آزاد کشمیر میں ممکن نہیں۔
وزیر اعظم راجہ فاروق حیدر نے کہا کہ ہندوستانی فائرنگ گولہ باری سے شہید،زخمی، املاک کے نقصانات، مال مویشیوں کے نقصانات کے معاوضہ جات میں اضافہ کیاگیا ہے۔ سابقہ ادوار میں برسراقتدار رہنے والوں کے کارنامے اگر عوام کے سامنے لے آئووں تو سب کو چڑیا گھر میں رکھنا پڑے۔ ایک سابق وزیر اعظم کہتا ہے کہ ہم نے ایل او سی پیکج ہضم کر لیا اس کو معلوم نہیں کہ ایل او سی پیکج کے اب تک 11 کروڑ روپے ریلیز ہوئے جو پاک فوج کو بنکرز کی تعمیر کے لیے دیے گئے ہیں۔ ایک سابق وزیر خزانہ کہتے ہیں 30 ارب کا حساب لیں گے ان کو کہیں آئیں بیٹھ کر حساب کر لیں جو جس کے ذمے نکلے گا تو پھر گلہ نہ کیجئے گا۔سردار عتیق کہتے ہیں کہ میں گلگت بلتستان کے حوالے سنسنی پھیلا رہا ہوں انہیں کہیں کہ سب سے بہترین اور سخت بات آپ کے والد صاحب نے کی تھی،کیا وہ بھی سنسنی خیزی پھیلا رہے تھے۔
انہوں نے کہا کہ کرونا کی دوسری لہر پہلے سے زیادہ خطرناک ،عوام ذمہ داری کا مظاہرہ کریں،کرونا وائرس سے بچائو کے حوالے سے آئندہ چند روز میں اہم فیصلہ کرینگے،مظفرآباد میں صفائی مہم شروع کررہے ہیں۔ وزیر اعظم نے کہاکہ ایل او سی کے متاثرین کو معاوضہ اور امداد پہنچائی جارہی ہے،برفباری کے باوجود انتظامیہ اور ایس ڈی ایم اے حکام متاثرین تک امداد پہنچارہے ہیں۔اس موقع پرکرونا وائرس اور گزشتہ دنوں وفات پانے والے میڈیا پرسنز کے بلندی درجات کیلئے فاتحہ خوانی بھی کی گئی۔

واپس کریں