کورونا ، آزاد کشمیر میں 21 نومبر سے 6 دسمبر تک لاک ڈائون کا فیصلہ
No image مظفر آباد۔ آزاد جموں وکشمیر میں کورونا کی دوسری لہر کی صورتحال میں 21 نومبر سے 6 دسمبر تک لاک ڈائون کا فیصلہ کیا گیا ہے۔سینئر وزیر طارق فاروق چودھری ،وزرائے کرام ڈاکٹر محمدنجیب نقی،مصطفی بشیر اور بیرسٹر افتخار گیلانی نے پریس کانفرنس میں لاک ڈائون کی تفصیلات کے بارے میںبتایا ۔ اس کے مطابق ہر قسم کے عوامی اجتماعات،جلسے ،جلوس بشمول زیارات وغیرہ اجتماع پر پابندی رہے گی،تمام سرکاری و پراوئیویٹ ادارے پچاس فیصد عملہ کے ساتھ کام کریں گے،دفاتر میں غیر متعلقہ افراد کے داخلے پر پابندی ہوگی،تمام تعلیمی ادارے ،دینی مدارس بند رہیں گے،شادی بیاہ کے اجتماعات پر پابندی ہو گی، شادی ہالز وغیرہ بند رہیں گے،ہوٹل ریسٹورینٹ میں کھانا دینے کی اجازت نہ ہوگی تاہم ' ٹیک اووے' کی حد تک اجازت ہو گی،تمام تجارتی مراکز،شاپنگ مالز ،ہر طرح کی تجارتی سرگرمیاں بند رہیں گی، کریانہ میڈیکل سٹور ،بیکری،فروٹ شاپس،سبزی ،گوشت،دہی ،گیس ،سٹیشنری اور تندور وغیرہ کی دکانات حفاظتی انتظامات کے ساتھ صبح سات بجے سے شام سات بجے تک کھلی رہیں گی۔تمام پرائیویٹ کلینک مکمل طور پر بند رہیں گے،آزاد کشمیر کی حدود میں سیاحوں کی آمد و رفت پر پابندی ہو گی،پارک و دیگر تفریحی مقامات بند رہیں گے، باربر شاپس،بیوٹی پارلرز بند رہیں گے، کھیل کود کے میدان،سٹیڈیم،کمپلیکس اورجمنیزیم بند رہیں گے،کھیلوں کے ٹورنامنٹ کے انعقاد پر پابندی رہے گی،نماز جنازہ ' ایس او پیز' کے مطابق ادا کیا جائیگا جس میں زیادہ سے زیادہ پچاس افراد شریک ہو سکیں گے اور اس کے لئے کھلی جگہ کا استعمال کیا جائے گا،پبلک ٹرانسپورٹ ' ایس او پیز' کے مطابق چلے گی اور خلاف ورزی پر تادیبی کاروائی عمل میں لائی جائے گی، تعمیراتی کام کی ' ایس او پیز' کے ساتھ اجازت ہو گی ،متعلقہ محکمہ،فرم ایس او پیز پر عملدرآمد کے ذمہ دار ہوں گے۔ لاک ڈائون اکیس نومبر رات بارہ بجے سے چھ دسمبر رات بارہ بجے تک ہو گا۔
واپس کریں