کشمیر کے ضلع پونچھ کے شاہ پور اور کرنی سیکٹرز میں فائرنگ اور مارٹر شیلنگ ، ترجمان بھارتی وزارت دفاع
No image جموں۔ کشمیر کے پونچھ سیکٹر میں بدھ کو پاکستان اور ہندوستان کی فوجوں کے درمیان چھوٹے ہتھیاروں سے فائرنگ اور مارٹر شیلنگ ہوئی ہے۔بھارتی وزارت دفاع کے ترجمان کرنل دیوندر آنند نے صحافیوں کو بتایا کہ بدھ کی شام سوا چھ بجکر دس منٹ پر پونچھ ضلع کے شاہ پور اور کرنی سیکٹرز میں پاکستان کی طرف سے فائرنگ اور مارٹر شیلنگ ہوئی جس کے جواب میں انڈین فوج نے بھی جوابی طور پر فائرنگ اور گولہ باری کی ہے۔
اس سے پہلے بھارتی حکام نے میڈیا کو بتایا تھا کہ جموں کے کٹھوعہ ضلع کے ہیرا نگر سیکٹر میں منگل کو پاکستان اور بھارت کے فوجوں کے درمیان ست پال، منیاری ،کرول کرشنا اور گرنام میں صبح نو بجکر دس منٹ سے شام ساڑھے چار بجے تک فائرنگ ہوئی ۔
واضح رہے کہ گزشتہ جمعہ اور ہفتہ کو کشمیر کو غیر فطری اور کشمیریوںکو جبری طور پر تقسیم کرنے والی لائین آف کنٹرول پہ تائوبٹ سے اوڑی تک پاکستان اور بھارت کی فوجوں کے درمیان شدید گولہ باری ہوئی جس میں پانچ بھارتی فوجی ہلاک اور متعدد زخمی ہوئے۔ پاکستان کا ایک فوجی جوان شہید اور چند زخمی ہوئے۔بھارتی فوج نے خاص طور پر آزاد کشمیر کی سول آبادی کو نشانہ بنایا جس سے متعدد شہری شہید و زخمی ہوئے اور متعدد گھر تباہ ہوئے۔بھارتی مقبوضہ جموں وکشمیر میں گزشتہ تیس سال سے بھارت سے آزادی کے لئے اقوام متحدہ کے چارٹر اور سلامتی کونس کی قرار دادوںکے مطابق رائے شماری کے مطالبے کے ساتھ سیاسی اور عسکری مزاحمتی تحریک جاری ہے اور بھارت نے مقبوضہ جموں وکشمیر میں کئی ظالمانہ قوانین نافذ کرتے ہوئے دس لاکھ فوج کو کشمیریوں کے خلاف حالت جنگ میں متعین کر رکھا ہے۔ گزشتہ سال بھارتی حکومت کی طرف سے مقبوضہ جموں وکشمیر کی ریاستی حیثیت ختم کر کے بھارت میں مدغم کرنے کے اقدام کے بعد مقبوضہ کشمیر میں حالات مزید خراب ہو گئے ہیں اور اس سے مسئلہ کشمیر کے حوالے سے بھی خطے میں پاکستان اور بھارت کے درمیان کشیدگی جنگی خطرات سے دوچار ہے۔
واپس کریں