ٹرمپ کی ہٹ دھرمی کی وجہ سے نئی امریکی انتظامیہ کی تشکیل تعطل کا شکار، جو بائیڈن کو دفاع اور انٹیلی جنس بریفنگ بھی نہیں دی جا رہی
No image نیو یارک(کشیر رپورٹ) امریکہ کے صدارتی الیکشن میں شکست سے دوچار ہونے والے صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کامیاب صدر جو بائیڈن کو نئے صدر کے طور پر مطلوبہ سہولیات کے لئے فنڈز کی فراہم روک رکھی ہے جس کی وجہ سے نئی امریکی انتظامیہ کی تشکیل کا پورا عمل کو تاخیر کا شکار ہو گیا ہے، صدر ٹرمپ نے نئے صدر کی سہولیات ،ٹیم کے انتخاب وغیرہ کیلئے فنڈز جاری نہیں کئے جس وجہ سے جو بائیڈن کو سرکاری بریفنگ ،ان کے ساتھیوںکی متعلقہ اداروں سے متعلق بریفنگ، سیکورٹی کلیرنس وغیرہ کا تمام عمل رکا ہوا ہے، جو بائیڈن کو پینٹاگان اور سی آئی اے کی طرف سے بریفنگ بھی نہیں دی جا رہی،اس سے تمام عمل تاخیر کا شکار ، جو عمل تین نومبر کے الیکشن کے بعد سے شروع ہونا تھا وہ اب بیس جنوری کو دن بارہ بجے کے بعد شروع ہو گا جب ٹرمپ فارغ ہو جائے گا۔
تفصیلات کے مطابق، جنرل سروسز ایڈمنسٹریشن کی سربراہی کرنے والے ٹرمپ نے ابھی تک انتخابی نتائج کی تصدیق نہیں کی ہے جس سے لاکھوں ڈالر ، سرکاری اداروں تک رسائی ، وفاقی ایجنسیوں میں دفتر کی جگہ اور بائیڈن کی منتقلی کی ٹیم کے لئے ٹیکس دہندگان کی مالی اعانت کے ضروری امور تعطل کا شکار ہیں۔ ٹرمپ انتظامیہ کے عہدیداروں نے بائیڈن کو انٹیلیجنس رپورٹس اور دیگر اہم معلومات فراہم کرنے سے انکار کردیا ہے جب تک کہ جی ایس اے انتخابی نتائج کو قبول نہیں کرتا ہے۔نو منتخب صدر جو بائیڈن نے اس صورتحال کو امریکہ کے لئے شرمناک قرار دیا ہے۔ٹرمپ کے اس اقدام کی وجہ سے امریکہ کی نئی انتظامیہ کی تشکیل کا تمام عمل تعطل کا شکار ہے۔ صدر کی تبدیلی کے ساتھ نئی امریکی انتظامیہ کی تشکیل کی کاروائی جو بیس جنوری کو مکمل کی جاتی ہے،اب بیس جنوری کے بعد ہی شروع کی جا سکے گی۔
، پچھلے ہفتے ہی ، قومی سلامتی کے 150 سے زائد سابق عہدیداروں نے ایک خط پر دستخط کیے تھے جس میں کہا گیا تھا کہ بائیڈن کو صدر منتخب ہونے کے طور پر تسلیم کرنے میں حکومت کی تاخیر قومی سلامتی کے لئے سنگین خطرہ ہے۔مونمائوتھ یونیروسٹی کے ایک نئے سروے کے مطابق ، 60 فیصد سے زیادہ امریکیوں کا کہنا ہے کہ ٹرمپ انتظامیہ کی منتقلی میں تاخیر قومی سلامتی کے لئے خطرہ ہے۔ سروے میں ، 61 فیصد امریکیوں نے بتایا کہ صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے 2020 کے صدارتی انتخابات میں جو بائیڈن کی متوقع کامیابی کے بعد منتقلی کے عمل میں تاخیر کرنا قومی سلامتی کے لئے خطرہ ہے۔61 فیصد میں سے 35 فیصد نے کہا کہ یہ ایک بڑا خطرہ ہے اور 26 فیصد نے کہا کہ یہ معمولی خطرہ ہے جبکہ 36 فیصد نے کہا کہ یہ خطرہ نہیں ہے اور 3 فیصد نے کہا کہ وہ نہیں جانتے ہیں۔
واپس کریں