'' باہمی مفاہمت '' کے تحت پاکستان پابند ہے کہ اس کے کنٹرول کی زمین انڈیا کے خلاف استعمال نہ ہو۔انڈین وزارت خارجہ کا مضحکہ خیز بیان
No image اسلام آباد( کشیر رپورٹ) انڈیا نے پاکستان میں دہشت گردی کرانے کی انڈیا کی کوششوں کے ثبوت سامنے آنے اور اقوام متحدہ کو پیش کرنے کی صورتحال میں اپنا یہ پروپیگنڈہ تیز کر دیا ہے کہ پاکستان کی طرف سے آزاد کشمیر سے عسکریت پسندوں کو مقبوضہ کشمیر داخل کرنے کے لئے بھارتی فوجیوں پر فارنگ کی جاتی ہے۔انڈین وزارت خارجہ کے ترجمان انوراگ سری وستوا نے جمعرات کو 'آن لائن بریفنگ ' میں کہا کہ پاکستان کی طرف سے دراندازی کرنے کے لئے پاکستانی فوج کشمیر میں کنٹرول لائین پر کور فائر کرتی ہے۔بھارتی ترجمان نے مزید کہا کہ '' باہمی مفاہمت '' کے تحت پاکستان اس بات کا پابند ہے کہ اس کے کنٹرول کی زمین انڈیا کے خلاف دہشت گردی کے لئے استعمال نہ ہو۔
واضح رہے کہ پاکستان اقوام متحدہ کے فوجی مبصرین کو کنٹرول لائین تک رسائی فراہم کرتا ہے جبکہ انڈیا جموں وکشمیر کی کنٹرول لائین کی نگرانی کے لئے اقوام متحدہ کی طرف سے متعین ملٹری آبزرور گروپ کو کنٹرول لائین تک رسائی فراہم نہیں کرتا تا کہ یواین ملٹری آبزرور گروپ کے سامنے انڈیا کا جھوٹا پروپیگنڈہ بے نقاب نہ ہو جائے۔گزشتہ دنوں ہی پاکستان کے فوجی ترجمان اور وزیر خارجہ نے انڈیا کی طرف سے افغانستان کی سرزمین سے پاکستان میں دہشت گرد ی کرانے کے لئے انڈیا کی مالی اور ہتھیاروں اور گولہ بارود وغیرہ کی فراہمی کے ٹھوس ثبوت ملکی اور عالمی میڈیا کے سامنے لائے اور اب یہ ثبوت اقوام متحدہ کو دیئے جا رہے ہیں۔ دوسری طرف انڈیا نے شملہ سمجھوتے اور اعلان لاہور کے تحت مسئلہ کشمیر پاکستان کے ساتھ مزاکرات کے ذریعے پرامن طور پر حل کرنے کے معاہدے اور عہد کی کھلی پامالی کرتے ہوئے مقبوضہ جموں وکشمیر کی ریاستی حیثیت ختم کرتے ہوئے انڈیا میں ضم کیا ہے،اس صورتحال میں انڈیا کی وزارت خارجہ کی طرف سے پاکستان کو باہمی عہد کی یاد دہانی کی بات مضحکہ خیز ہے۔
واپس کریں