بھارت کشمیر کا تنازعہ تسلیم اور مزاکرات سے حل کرے، پروفیسر عبداغنی بٹ
No image سرینگر۔مقبوضہ کشمیر کے سنیئر حریت رہنما پروفیسر عبداغنی بٹ نے بھارت کے غیر قانونی زیر قبضہ جموںوکشمیر میںسینئر حریت رہنما پروفیسر عبدالغنی بٹ نے خطے میں پائیدار امن کویقینی بنانے کے لئے تنازعہ کشمیر کو پاکستان ، بھارت اور کشمیریوںکی حقیقی قیادت کے درمیان بامعنی اور نتیجہ خیز مذاکراتی عمل کے ذریعے حل کرنے پر زوردیا ہے۔ پروفیسر عبدالغنی بٹ نے پلوامہ کے علاقے پامپور میں مختلف عوامی اجتماعات سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بھارت کو بالا دستی کا رویہ ترک کر کے اس حقیقت کو تسلیم کرنا چاہیے کہ کشمیر ایک تنازعہ ہے اور اسے مذاکراتی عمل کے ذریعے حل کرنا چاہیے۔ کشمیری عوام ایک مقدس مقصد کیلئے بے مثال قربانیاں دے ر ہے ہیں جس کا صلہ یقینا انہیں آزادی کی صورت میں ملے گا۔انہوں نے کہا کہ جنوبی ایشیاکے پورے خطے پر جنگ کے بادل منڈلا رہے ہیںاور جنگ کی صورت تباہی پوری دنیا خصوصا خطے کو اپنی لپیٹ میں لے لے گی ، عالمی برادری کا یہ اخلاقی فرض اور ذمہ داری ہے کہ وہ کشمیری عوام کی خواہشات کے مطابق مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے بھارت پر دبائو ڈالے۔
واپس کریں