کشمیر یونیورسٹی کے کشمیر سٹیڈیز انسٹیٹیوٹ کی مطبوعات' کشمیر ماضی اور حال' اور ' جرنل آف کشمیر سٹیڈیز' کی تقریب رونمائی
No image سرینگر۔ کشمیر یونیورسٹی کے 'انسٹی ٹیوٹ آف کشمیر اسٹڈیز' کی دو مطبوعات،'کشمیر ماضی اور حال' اور 'جرنل آف کشمیر اسٹیڈیز' کی تقریب رونمائی میں وائس چانسلر یونیورسٹی آف کشمیر پروفیسر طلعت احمد نے بھی شرکت کی۔انہوں نے ڈائریکٹر کشمیر سٹیڈیز انسٹیٹیوٹ کے پروفیسر ایم وائی گنائی ، ڈاکٹر شیراز احمد ڈار اور ڈاکٹر محمد ابراہیم وانی کی کتاب کی تدوین کرنے کی تعریف کی اور کہا کہ کشمیر سٹیڈیز میں حال ہی میں بشریات میں ماسٹرز پروگرام شروع کیا ہے جو ماہرین تعلیم اور تحقیق کو فروغ دینے کی سمت سفر میں ایک اہم سنگ میل ہے۔
پروفیسر گنائی نے کہا کہ 'کشمیر ماضی اور حال'اور ' جرنل آف کشمیر سٹیڈیز' کے مضامین میں خطے کی معاشرتی اور ثقافتی ورثہ اور تاریخ کے مختلف پہلو بیان کئے گئے ہیں ، جس میں اس کی شناخت ، ثقافت ، زبانی تاریخ ، شاعری ، فن تعمیر ، ماحولیات اور صنعت شامل ہیں۔مقررین نے ان اشاعتوں کو جموں وکشمیر کے معاشرتی ، معاشی ، سیاسی ، تکنیکی ، ماحولیاتی ، ادبی اور لوک پہلوئوں اور کشمیر میں مذہبی زندگی ، ادب ، مقبول ثقافت اور دیہاتی زندگی سے متعلق اہم امور کا احاطہ قرار دیا۔ الہ آباد کی یونیورسٹیوں کے سابق وائس چانسلر پروفیسر رتن لال ہنگلو نے ریکارڈ شدہ ویڈیو میں کتاب کا جائزہ پیش کرتے ہوئے کہا کہاسکالرز نے معاشرتی ، معاشی ، سیاسی ، تکنیکی ، ماحولیاتی ، ادبی اور لوک پہلوں اور کشمیر میں مذہبی زندگی ، ادب ، مقبول ثقافت اور دیہاتی زندگی سے متعلق بہت ہی اہم امور کا مطالعہ کیا ہے۔یہ یادگار مطالعہ ذرائع سے مالا مال ہے ، تفصیل سے گہری اور وسعت میں مکمل ہے۔ یہ ایک علاقائی تاریخ ہے جو مائکرو اور میکرو مطالعات کی پرتوں پر استوار ہے۔ مہمان خصوصی پروفیسر بشیر احمد خان ، ڈین فیکلٹی آف سوشل سائنسز نے کہا کہ طلبا اور سکالرز کو چاہئے کہ وہ اس کتاب سے متاثر ہوں اور علاقائی ، قومی اور بین الاقوامی سطح پر معیاری ہم مرتبہ جائزہ اشاعتوں کی طرف کام کریں۔تقریب کی صدرارت ڈاکٹر ابراہیم وانی نے کی۔
واپس کریں