ایرانی سائنسدان کو سیٹلائٹ سے کنٹرول ہونے والی مشین گن کی فائرنگ سے قتل کیا گیا، ڈپٹی کمانڈر ایرانی انقلابی فوج
No image لندن ۔ ایران کے اعلی ایٹمی سائینسدان کو ایک خود کار مشین گن کی فائرنگ سے قتل کیا گیا اور اس مشین گن کو ایک ' سیٹلائٹ' سے کنٹرول کیا جا رہا تھا۔ برطانوی اخبار'' دی گارڈین'' نے ایران کے انقلابی گارڈز کے ڈپٹی کمانڈر علی فدوائی کے حوالے سے کہا ہے کہ ایرانی سائینسدان تہران میں اپنی گاڑی خود ڈرائیور کر رہے تھے اور انہیں ایک ٹرک میں نصب ایسی مشین گن سے قتل کیا گیا جسے ایک ' سیٹلائٹ' کے ذریعے کنٹرول کیا جارہا تھا اور اس جگہ حملے میں ملوث کوئی شخص موجود نہیں تھا۔اس مشین گن میں ' سیٹلائٹ کنٹرولڈ سمارٹ سسٹم ' نصب تھا۔اس مشین گن سے تیرہ فائر کئے گئے ۔ ایرانی سائینسدان کی اہلیہ ان سے پچیس سینٹی میٹر کے فاصلے پہ گاڑی میں موجود تھیں اور انہیں کوئی نقصان نہیں پہنچا۔اس فائرنگ کے بعدوہ ٹرک دھماکے سے تباہ ہو گیا جس میں ' سیٹلائٹ ' سے کنٹرول ہونے والی مشین گن نصب تھی۔ایرانی ڈپٹی کمانڈر نے کہا کہ اسرائیل اس حملے کے ذریعے ایران کو مشتعل کرنا چاہتا تھا کیونکہ امریکہ کے نئے صدر جو بائیڈن ایران کے ساتھ ایٹمی معاہدہ بحال کرنا چاہتے ہیں۔
واپس کریں