مقبوضہ کشمیر کے تمام علاقوں میں برفباری کا سلسلہ جاری، سکول اٹھائیس فروری تک بند کرنے کا اعلان
No image سرینگر۔ مقبوضہ کشمیر میں دو دن سے برفباری کا سلسلہ جاری ہے جس سے وادی کشمیر کے تمام علاقوں میں برف کی سفید چادر بچھ گئی ہے جبکہ پہاڑی علاقوں میں بھاری برفباری ہوئی ہے۔ برفباری سے سردی میں شدید اضافہ ہو گیا ہے۔برفباری سے سرینگر جموں سڑک اور سرینگر لیہہ سڑک بند ہو چکی ہے۔یہ موسمی صورتحال اگلے چوبیس گھنٹوں تک جاری رہ سکتی ہے،اوراس دوران درمیانی تابھاری برف باری ہونے کاامکان ہے۔چالیس دنوں پرمحیط چلہ کلان کی آمدسے 9دن پہلے کشمیروادی میں پھر موسم نے کروٹ بدلی اورمحض دوروزبعد ہلکی برف باری اوربارشوں کاسلسلہ شروع ہوگیا۔محکمہ موسمیات کے مطابق رواں موسمی صورتحال اگلے چوبیس گھنٹوںتک جاری رہنے کاامکان ہے اوراس دوران کہیں کہیں ہلکی ،کہیں درمیانہ توکہیں بالخصوص بالائی علاقوںمیں بھاری برف باری ہونے کاامکان ہے ۔محکمہ موسمیات کی پیش گوئی کے مطابق جمعہ کی شام سے 13 دسمبر تک کشمیر وادی ،خطہ پیرپنچال،وادی چناب اورلداخ میں برف وباراں جیسی موسمی صورتحال جاری رہ سکتی ہے تاہم بعد ازاں موسم میں بہتری واقع ہونے کاامکان ہے۔
جمعرات اورجمعہ کی درمیانی شب گلمرگ کشمیر میں سب سے سردترین مقام رہاکیونکہ وہاں شبانہ درجہ حرارت منفی5اعشاریہ2ڈگری سیلشیس ریکارڈ کیاگیاجبکہ سری نگرشہر میں دوران شب پارہ2.3ڈگری سیلشیس تھا۔ادھر لداخ میں لیہہ سردترین مقام رہاجہاں رات کاکم سے کم درجہ منفی11.9ڈگری سیلشیس درج کیاگیا۔ادھر حکام نے جمعہ کے روز کپوارہ کرناہ شاہراہ کے علاوہ کیرن کوکرناہ سے ملانے والی سڑک کوبھی ٹریفک کی آمدورفت کیلئے کھول دیاتاہم کپوارہ مژھل روڑ اوربانڈی پورہ گریز شاہراہ ہنوز بند ہے ۔ادھر مغل روڑ اورسری نگرلیہہ شاہراہ کوبھی ابھی تک ٹریفک کیلئے نہیں کھولاگیا ہے۔
دریں اثنای مقبوضہ کشمیر میں اکیس دسمبر سے اٹھائیس فروری تک سکول بند رکھنے کا اعلان کیا گیا ہے۔
واپس کریں