حکومت 31 جنوری تک مستعفی ہوجائے ،ورنہ یکم فروری کو لانگ مارچ کی تاریخ کا اعلان کردیا جائے گا۔مولانا فضل الرحمان
No image لاہور۔حکومت کے خاتمے اور نئے آزادانہ،منصفانہ اور شفاف الیکشن کے مطالبے کے ساتھ آئین و پارلیمنٹ کی حقیقی بالادستی قائم کرنے کے مطالبا ت کے ساتھ قائم گیارہ اپوزیشن جماعتوں کے اتحاد' پاکستان پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ ( پی ڈی ایم) نے چاروں صوبوں میں پانچ جلسوں کے بعد یکم فروری کو حکومت کے خاتمے کے لئے' لانگ مارچ' کی تاریخ طے کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ 31 دسمبر تک ارکان قومی و صوبائی اسمبلی استعفے اپنی جماعت کے قائدین کو دے دیں گے۔
'پی ڈی ایم' کے سر براہ مولانا فضل الرحمان نے ' پی ڈی ایم ' کے رہنمائوں کے ساتھ لاہور میں میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ عوام آج سے ہی لانگ مارچ کی تیاری شروع کردیں، واضح کردینا چاہتے ہیں کہ حکومت 31 جنوری تک مستعفی ہوجائے، اگر حکومت مستعفی نہ ہوئی تو یکم فروری کو لانگ مارچ کی تاریخ کا اعلان کردیا جائے گا۔
جاتی عمرہ میں ' پی ڈی ایم' کے رہنمائوں کے ہنگامی اجلاس کے بعد مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ 31دسمبر تک ارکان قومی و صوبائی اسمبلی استعفے اپنی جماعت کے قائدین کو دے دیں گے۔مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ ڈائیلاگ نہیں، لانگ مارچ جنوری یا فروری، سلیکٹرز ان کا ساتھ چھوڑ دیں ورنہ بڑا حادثہ ہوسکتا ہے، عوام کے حق حکمرانی میں رکاوٹ نہ ڈالی جائے۔انہوں نے کہا کہ لاہور میں کل تاریخی اور فقید المثال اجتماع منعقد ہوا، پی ڈی ایم کے رہنماں نے کل تاریخی اعلامیے پر بھی دتسخط کردیے ہیں۔ مولانا فضل الرحمن نے کہا کہ صوبائی کمیٹیوں کو لانگ مارچ کی تیاریوں کے لیے دیا گیا شیڈول برقرار رہیگا۔
واپس کریں