جدید سائنسی ترقی سے مستفید ہونے کیلئے دقیانوسی و جہالت کے نظریات کو رد کرنا ہوگا،وزیر اعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر خان
No image اسلام آباد ۔ وزیر اعظم آزادجموں وکشمیر راجہ محمد فاروق حیدرخان نے کہا ہے کہ جدید سائنسی ترقی سے مستفید ہونے کیلئے دقیانوسی و جہالت کے نظریات کو رد کرنا ہوگا۔ اگر جہالت سائنس پر حاوی ہوگئی تو ترقی کیسے کرینگے ، کورونا ویکسین اور پولیو کے قطروں کے حوالے سے قیاس آرائیاں کی جارہی ہے جو کہ انتہائی افسوس کا مقام ہے ۔ اللہ رب العزت کو انسان کو اختیار دیکر دنیا میں بھیجا اور اگر ایسا نہ ہوتا تو غربت افلاس نہ ہوتی۔آبادی میں اضافے کی شرح کو کنٹرول کرنے سمیت دیگر اہم معاملات پر رہنمائی کیلئے علماکرام کی ریاست گیر کانفرنس بلائیں گے جس میں قومی پالیسی تشکیل دی جائے گی جبکہ اس کے ساتھ ساتھ منتخب نمائندوں اور سول سوسائٹی کو بھی مشاورتی عمل میں شریک کیا جائے گا۔
وزیر اعظم آزادکشمیر راجہ محمد فاروق حیدرخان جموں وکشمیر ہاس اسلام آباد میں محکمہ بہبود آبادی آزادکشمیر اوربین الاقوامی تنظیم پاتھ فائنڈر انٹرنیشنل کے درمیان مفاہمتی یادداشت پر دستخط کرنے کی تقریب کے موقع پر اظہار خیال کررہے تھے ۔ اس موقع پر وزیر بہبود آبادی آزادکشمیر ڈاکٹر مصطفی بشیر ، سیکرٹری بہبود آبادی ، پاتھ فائنڈر کی کنٹری ڈائریکٹر و دیگر نمائندگان بھی موجود تھے ۔ مفاہمت کی یادداشت کے تحت آزادکشمیر میں تولیدی صحت اور آبادی میں اضافے کے رحجان کو کم کرنے کے حوالے سے باہمی اشتراک پائیدار اقدامات اٹھائے جائیں گے اوراس کیلئے حکومت آزادکشمیر غیر سرکاری تنظیم کے ساتھ ملکر عوامی شراکت سے مختلف سرگرمیاں منعقد کریگی ۔ یاد رہے کہ پاتھ فائنڈر حکومت آزادکشمیر کے ساتھ مفاہمتی یادداشت سے پہلے حکومت پاکستان اور چاروں صوبوں سے ملکر بڑھتی ہوئی آبادی کو کنٹرول کرنے کیلئے 2010سے پاکستان میں کام کررہی ہے ۔
وزیر اعظم راجہ محمد فاروق حیدرخان نے کہا کہ آزادکشمیر کے معاشرے میں بہت گنجائش میں موجود ہے کہ ہم لوگوں کے ساتھ رابطے مضبوط کریں انہیں اس کی اہمیت و افادیت کا احساس دلائیں۔ بڑھتی ہوئی بے ہنگم آبادی کسی بھی خطے کی ترقی و خوشحالی کیلئے سب سے بڑا چیلنج ہے ۔انہوں نے کہاکہ آزادکشمیر کے معاشرے جہاں خواتین کو بہت عزت و احترام دیا جاتا ہے اور لڑکیوں کی شرح تعلیم بھی بہت زیادہ ہے میں موثر آگاہی کے ذریعے بہت جلد دیر پا نتائج حاصل کیے جا سکتے ہیں۔ وزیر اعظم نے کہاکہ حکومت آزادکشمیر نے خواتین کو بااختیار بنانے اور تمام شعبہ زندگی میں ان کی بھرپور شرکت کیلئے نہ صرف قانون سازی کی بلکہ عملی اقدامات اٹھائے جس کی بدولت آج واضح بہتری نظرآرہی ہے۔ ہماری حکومت نے 3500لیڈی ہیلتھ ورکرز کو مستقل کیا ۔ آزادکشمیر گزشتہ دو ھائیوں سے پولیو فری ہے ۔ انہوں نے کہاکہ حکومت آزادکشمیر اس حوالے سے اٹھائے جانے والے اقدامات کی بھرپور پشت پناہی کریگی۔
واپس کریں