مظفر آباد میں گلگت بلتستان ہائوس اور زمینی راستے مستحکم کئے جائیں گے،صوبہ نہیں بن سکتا، وزیر اعظم راجہ فاروق حیدر خان
No image مظفر آباد۔وزیراعظم آزادجموں وکشمیر راجہ محمد فاروق حیدر خان نے کہا ہے کہ گلگت بلتستان مسئلہ جموں کشمیر کا حصہ ہے، آزادکشمیر کی قیادت نے گلگت بلتستان کے عوام کے ساتھ رابطہ نہیں رکھا اس کا اعتراف کرتا ہوں، گلگت بلتستان کے لوگوں کے حقوق کی مخالفت کا سوچ بھی نہیں سکتے ،انہیں تمام حقوق ملنے چاہیں ،کشمیر کے مسئلے کے مستقل حل تک اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق گلگت بلتستان صوبہ نہیں بن سکتا ،مظفرآباد میں گلگت بلتستان ہائوس کے لیے جگہ فراہم کرنے کے ساتھ ساتھ تعلیمی اداروں میں ان کی نشستیں بھی بڑھائی جائیں گی ،ہائیڈل جنریشن اور سیاحت میں دونوں خطے ایک دوسرے کے تجربات سے فائدہ اٹھا سکتے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے محترمہ ثریا زمان کی قیادت میں ملنے والے گلگت بلتستان اسمبلی کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ وزیر اعظم راجہ محمد فاروق حیدرخان نے کہا کہ گلگت بلتستان کے لوگوں کو اس وقت تک یہاں ملازمت کے حقوق حاصل تھے جب تک وہاں باشندہ ریاست سرٹیفیکیٹ تھا جب وہ ختم ہوگیا تو پھر یہ سلسلہ بھی بند ہوگیا، اب اگر یہ دوبارہ بحال ہوتا ہے تو پھر سے وہ یہاں ملازمت کے حقوق حاصل سکتے ہیں، اس کے علاوہ اوپن میرٹ پر بھی اپلائی کرسکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان کے لوگوں نے بہت مسائل و مشکلات کا سامنا کیا، حکومت پاکستان سے پھر مطالبہ کرتے ہیں کہ ٹرپل ایم سڑک کو ترجیحی بنیادوں پر شروع کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ اس کے علاوہ گلگت بلتستان کے ساتھ زمینی رابطے بھی مزید مستحکم بنائیں گے، گلگت کے لوگوں کوروحانی نظریاتی جسمانی طور پر کبھی اپنے آپ سے جدا نہیں سمجھتے، گلگت بلتستان میں بھی منقسم خاندانوں کی بڑی تعداد آباد ہے ان کے بھی مسائل ہماری طرح ہیں اور مسئلہ کشمیر سے یہ لوگ جڑے ہوے ہیں ۔وزیراعظم آزادکشمیر نے کہا کہ تعلیم و صحت سمیت تمام اہم شعبہ جات میں گلگت بلتستان کو جہاں جہاں ہماری ضرورت ہوئی ہم بھرپور تعاون کرینگے ،مارچ میں خود بھی وہاں کا دورہ کرونگا۔
واپس کریں