الیکشن میں پیپلز پارٹی سے اتحاد نہیں ہوگا،عوام کا مسلم لیگ(ن) پر اعتماد ہے،وزیر اعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر خان
No image اسلام آباد۔ وزیر اعظم آزادجموں وکشمیر وصدرمسلم لیگ ن راجہ محمد فاروق حیدرخان کیساتھ مسلم لیگ ن آزادکشمیر کے عہدیداران کی نشست، 5فروری کو مظفرآباد میں یوم یکجہتی کشمیر کے حوالہ سے پی ڈی ایم کے جلسہ میں بھرپور شرکت کا فیصلہ ۔ جماعتی عہدیداران سے خطاب کرتے ہوئے صدرمسلم لیگ ن راجہ محمد فاروق حیدرخان نے کہاکہ آزادکشمیر میں پی ڈی ایم کا قیام خارج از امکان ہے ، پیپلز پارٹی کے ساتھ نہ کوئی اتحاد ہوگا اور نہ سیٹ ایڈجسٹمنٹ، انتخابی میدان میں پیپلزپارٹی سے بھرپور مقابلہ ہوگا ۔صدرمسلم لیگ ن نے کہاکہ آزادکشمیر میں الیکشن قریب آرہے ہیں اور باقی سیاسی جماعتوں کو لوگ چھوڑ کر جارہے ہیں لیکن مسلم لیگ ن میں لوگ نہ صرف شامل ہورہے ہیں بلکہ پر اعتماد طریقے سے عام انتخابات کی بھرپور تیاریوں میں مصروف عمل ہیں ۔ یہ عوام اور لیگی کارکنان کا اپنی قیادت پر اعتماد کا مظہر ہے ۔ انہوں نے کہا کہ 84ہزار مربع میل کی ریاست سکڑ کر5ہزار مربع میل پر آگئی ہے ۔ ہم کسی صورت کشمیر کی تقسیم نہیں ہونے دینگے ۔ کشمیرکا فیصلہ کرنے کا حق صرف کشمیریوں کو حاصل ہے ۔ کشمیریوں نے قیام پاکستان سے قبل 19جولائی1947کو قرارداد الحاق پاکستان کے ذریعے اپنا مستقبل کا فیصلہ کر دیا تھا۔ مقبوضہ کشمیر کے عوام پاکستان کیلئے قربانیوں کی لازوال داستان رقم کررہے ہیں ۔ وزیراعظم نے کہاکہ اللہ رب العزت نے ختم نبوت کو آزادکشمیر کے آئین کا حصہ بنانے جیسا عظیم کام ہم سے لیا جس پر اپنے آپ کو خوش نصیب سمجھتے ہیں ۔ میجر ایوب کلین شیو آدمی تھے لیکن قانون ساز اسمبلی میں ختم نبوت پر سب سے پہلے انہوں نے قرارداد پیش کی ۔ ختم نبوت کو آزادکشمیر کے آئین کا حصہ بنانے پر سیاست نہیں کرتے بلکہ اس کو اپنے لیے بہت بڑا اعزاز سمجھتے ہیں ۔ راجہ محمد فاروق حیدرخان نے کہاکہ مقبوضہ کشمیر کے مظلوم بھائیوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کیلئے ہم سب کو متحد رہنا ہے ۔ مقبوضہ کشمیر میں اس وقت ایک لاکھ سے زائد شہداے ہیں ، جموں میں اڑھائی لاکھ شہدا ہیں ، ساڑھے چھ ہزار بے نامی قبریں ، 11ہزار خواتین کی عصمت دری کی گئی ہے ، ہمیں ان کے ساتھ بھرپور اظہار یکجہتی کرنا ہے ، ان کے حق کیلئے بھرپور آواز اٹھانی ہے اور صدائے احتجاج بلند کرنی ہے ، یہ ہمارا اخلاقی اور قومی فریضہ ہے ۔ انہوں نے کہاکہ سیاسی تفریق کو بالائے طاق رکھتے ہوئے پانچ فروری کو مظفرآباد کے جلسہ میں شرکت کریں ۔ انہوں نے کہا کہ یہ کوئی سیاسی جلسہ نہیں بلکہ ریاست جموں وکشمیر کے مظلوم و محکوم عوام کے ساتھ اظہار یکجہتی کرنا ہے ۔
واپس کریں