ہندوستانی مقبوضہ کشمیر میں مقامی آبادی کو اقلیت میں تبدیلی کرنے کی بڑی کاروائی ،33لاکھ8ہزارشہریت کے سرٹیفیکیٹ جاری
No image نئی دہلی( کشیر رپورٹ)ہندوستانی حکومت نے 5اگست2019سے اب تک مقبوضہ جموں وکشمیر میں 33لاکھ8ہزار ڈومیسائل سرٹیفیکیٹ جاری کئے ہیں اور اس طرح مقبوضہ جموں وکشمیر کی کل آبادی کے تقریبا 30فیصد غیر ریاستی افراد کو مقبوضہ جموں وکشمیر کی شہریت دیتے ہوئے ریاست میں آبادی کا تناسب تبدیل کرنے کا ایک بڑا قدم اٹھایا گیا ہے۔مرکزی وزیر مملکت برائے داخلہ جی کشن ریڈی نے ایک سوال کے تحریری جواب میں لوک سبھا کو بتایا کہ حکومت جموں وکشمیر نے اطلاع دی ہے کہ 25 جنوری 2021 تک جموں وکشمیر میں کل 33لاکھ 80ہزار234ڈومیسائل سرٹیفکیٹ جاری کیے گئے ہیں( یعنی اتنے افراد کو مقبوضہ ریاست کی شہریت دی گئی ہے)۔ریڈی نے مزید بتایا کہ اگست 2019 میں آرٹیکل 370 کو منسوخ کرنے اور جموں و کشمیر کو مرکزی خطوں میں تقسیم کرنے کے بعد سے اب تک 54 عسکریت پسندوں کے حملوں میں 58 شہری اپنی زندگی سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں۔یکم اگست ، 2019 کے بعد سے ، 613 افراد بشمول علیحدگی پسند ، زیر زمین کارکن ، پتھر مارنے والے ، وغیرہ کو مختلف مقامات پر حراست میں لیا گیا۔ہندوستانی وزیر مملکت برائے داخلہ نے کہا کہ کشمیر میں انٹلیجنس آدانوں کی نشاندہی پردہشت گردی کے حامیوں کی نشاندہی اور گرفتاری کی کاروائیاں تیزی سے جاری ہیں۔ اس کے علاوہ عسکریت پسندوں کے خلاف فوجی آپریشن مسلسل جاری ہیں اور تمام مقبوضہ کشمیر میں فورسز کے گشت، ناکے اور دوسرے انتظامات لاگو ہیں۔
واپس کریں