عمران خان زور زبر دستی آزاد کشمیر کا الیکشن جیتنے کا خیال دل سے نکال دیں،وزیر اعظم راجہ فاروق حیدر خان
No image اسلام آباد۔وزیر اعظم آزادحکومت ریاست جموں وکشمیر راجہ محمد فاروق حیدر خان نے کہا ہے کہ لائن آف کنٹرول کے عوام کی قربانیاں ناقابل فراموش ہیں، ' ایل او سی' پر شہید ہونے والوں کے نابالغ ورثا کو فی کس 3ہزار روپے کا پیکج دے رہے ہیں، شہدائے لنجوٹ کی برسی ہر سال سرکاری سطح پرمنائی جائے گی، غاصب بھارتی فوج نے 25فروری 2000کو سیز فائر لائن کی بدترین خلاف ورزی کرتے ہوئے 14نہتے کشمیریوں کو شہید کیا۔ 3افراد کے سر قلم کرکے لے گئے۔ قربانیوں میں شہدائے لنجوٹ کو بڑا حصہ ہے، وزیر اعظم نے کہا کہ عمران خان کا بیان کہ آزادکشمیر کا الیکشن ہر قیمت پر جیتیں گے معنی خیز ہے، ہم نے چوڑیاں نہیں پہن رکھی ہیں، زور زبردستی الیکشن جیتنے کا خیال دل سے نکال دیں۔ گڑ بڑ ہو جائے تو ان میں اور انڈیا میں کیا فرق رہ جائے گا۔ مودی بھی طاقت کے بل بوتے پر مقبوضہ کشمیر فتح کرنا چاہتا تھا۔ وزیر اعظم نے کہا کہ نوشہرہ خیبرپختونخواہ میں پرویز خٹک کی سیٹ پر مسلم لیگ ن کا میاب ہوئی۔ ڈسکہ میں الیکشن کمیشن اعتراف کر رہا ہے کہ پرزائیڈنگ آفیسران غائب کرکے ووٹوں سے گڑ بڑ کی گئی۔
تھکیالہ سے نئے سیاسی سفر کا آغاز کر رہے ہیں۔ نکیال کے کارکنان کے مشورے سے حلقہ کے سیاسی فیصلے کریں گے۔ سردار سکند ر حیات کا احترام کرتا ہوں،ان سے کہا تھا کہ بند کمرے میں جو مرضی کہیں سنیں گے مگر اخباری بیانات دیں گے تو پھر جواب دیا جائے گا۔ عتیق خان نے سکندر حیات کو برابھلا کہنے کے لیے آگے لگایا ہوا ہے وہ خود خاموش رہتا ہے اور سکندر حیات سے بیانات دلواتا ہے۔ سکندر حیات کے ساتھ جب ان کا سگا بھائی نہیں تھا اس وقت میں اور کیپٹن سرفراز ان کے ساتھ کھڑے ہوئے تھے۔ سکندر حیات کو صدر ریاست میاں محمد نواز شریف نے بنوایا تھا۔ سینے میں بہت سے راز ہیں مگر سکندر حیات خان کی طرح اگر ہم نے بیانات شروع کیے تو ان میں اور ہم میں کوئی فرق نہیں رہ جائے گا۔ سردار عبدالقیوم خان کی وفات پر سکندر حیات سے کہا فاتحہ پڑھنے چلیں وہ مکر گئے۔ سکندر حیات نے 2016میں مجھے وزیر اعظم دل سے قبول نہیں کیا۔ ان کے ساتھ کوئی اختلاف نہیں تھا صرف اس بات پر اختلاف ہو کہ میں نے انہیں جواب دیا تھا کہ حکومتی مشینری پر ان کے سیاسی مخالفین کو کرش نہیں کر سکتا۔ ان کی طرف سے حکومتیں بنانے اور گرانے کا بیان مضحکہ خیز ہے۔ ہم ساتھ تھے تو حکومتیں بناتے گراتے تھے اب پلوں کے نیچے سے بہت سار ا پانی گزر چکا ہے۔
ان خیالات کا اظہار وزیرا عظم راجہ محمد فاروق حیدر خان نے کشمیر ہاس میں نکیال سے صدر مسلم لیگ ن حلقہ سردار منیر حسین کی قیادت میں آئے 100رکنی وفد سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ حلقہ ایل اے 9کوٹلی 2فتح پور تھکیالہ (نکیال) سے 100رکنی وفد نے وزیر اعظم سے ملاقات کی۔ وفد میں صدر مسلم لیگ ن فتح پور تھکیالہ سردار منیر حسین خان، سردار عصمت اللہ، سردار محمد بشیر خان، سردار محمد اصغر خان، سر دار حفیظ اللہ، سردار ظفر، سردار محفوظ طاہر،سردار فاروق حیدر ایڈووکیٹ،سردار محمود، سردار عبید،سردار خالد، سردار حامد رضا، سردار عبدالشکور خان، سردار عتیق احمد ایڈووکیٹ ،سردا ر قدیر، سردار رحمان،سردار عابد، سردار اشفاق، سردار وزیر، چیئرمین لعل شاکر، سردار خضر صادق و دیگر شامل تھے۔
عمائدین حلقہ فتح پور تھکیالہ نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم آزادکشمیر و صدر مسلم لیگ ن راجہ محمد فاروق حیدر خان کی قیادت پر غیر متزلزل اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ کریلوی خاندان نے ہمیشہ عوام کو نظر انداز کیا اور ذاتی مفادات حاصل کیے۔ عوام ان کے مزارعے نہیں ہیں کہ وہ جو فیصلے کریں اس پرلبیک کہ دیا جائے۔ حلقہ کے لوگ مسلم لیگ ن اور میاں محمد نواز شریف کے ساتھ ہیں۔ راجہ محمد فاروق حیدر خان کی گڈ گورننس، میر ٹ کی بحالی، مسئلہ کشمیر پر دو ٹوک موقف،،13ویں ترمیم، ختم نبوت قانون اور ریاست میں تعمیر وترقی جیسے کارناموں کی بدولت حلقہ کے عوام راجہ فاروق حیدر پر اعتماد کا اظہار کرتے ہیں۔ رہنماں نے کہا کہ کریلوی خاندان نے تھکیالہ کو ذاتی مفادات کے لیے استعمال کیا اور جان بوجھ کر نظر انداز رکھا تاکہ لوگ بنیادی سہولیات سے محروم رہیں اور پستے رہیں۔ مگر اب ایسا نہیں ہو گا۔ 70کی دھائی سے کریلوی خاندان تھکیالہ کے سر پر جیتتا رہا ہے اور اقتدار کے مزے لیتا رہا۔ نکیال سے مسلم لیگ ن جیتی تھی کریلوی خاندان کے بغیر بھی ہم سیٹ جیت کر دکھائیں گے۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم آزادحکومت ریاست جموں وکشمیر راجہ محمد فاروق حید رخان نے کہا کہ سردار منیر حسین خان حلقہ میں میر ے نمائندہ ہیں۔ جملہ امور وہ دیکھیں گے۔ فاروق سکندر سے کہا والد کو سمجھا کہ اب بہت ہو چکا ہے۔ سکندر حیات کے ساتھ طویل عرصہ گزارا۔ ان کا اس قدر احترام تھا کہ دورہ کوٹلی پر پرانے ریسٹ ہاس کمرہ نمبر 1میں رکا تو بیڈ پر نہیں سویا بلکہ صوفے پر سویا کہ اس بیڈ پر سکندر حیات سوتے تھے۔ اللہ کے علاوہ کسی کا ڈر نہیں۔ وزیر اعظم نے کہا کہ آنے والا دو ر مسلم لیگ ن کا ہے آج جو لوگ پارٹی چھوڑ کر بیان بازی کر رہے ہیں۔ جولائی 2021میں پیر سوڑا کی پہاڑی میں کسی پتھر کے نیچے چھپیں گے۔ مسلم لیگ ن میں کوئی دراڑ نہیں۔ پارلیمانی پارٹی متحد ہے اور پوری طاقت اور اتحاد کے ساتھ الیکشن میں جائیں گے۔ اپنی کارکردگی لیکر عوام کے پاس جائیں گے اور الیکشن جیت کر تعمیر و ترقی اور نظام کی بہتری کا سفر آگے بڑھائیں گے۔

واپس کریں