5 فروری کومظفر آباد جلسے میں فضل الرحمان، مریم نواز اور بلاول بھٹو بھی شرکت کریں گے، شاہ غلام قادر
No image مظفر آباد ۔سپیکر آزاد جموں وکشمیرقانون ساز اسمبلی و سیکرٹری جنرل پاکستان مسلم لیگ (ن)آزاد کشمیر شاہ غلام قادر نے کہا ہے کہ 05 فروری کو پاکستان کی تمام اپوزیشن جماعتیں مقبوضہ کشمیر کے عوام کے ساتھ اظہار یکجہتی کیلئے مظفرآباد آئیں گی۔ پاکستان کی سیاسی جماعتوں کی جانب سے اس یکجہتی سے تحریک آزادی کشمیر کو تقویت ملے گی۔ یکجہتی کشمیر جلسہ کی میزبانی مسلم لیگ (ن)آزاد کشمیر کرے گی جبکہ دیگر تمام سیاسی جماعتیں اس میں بھرپور شریک ہوں گی۔ اس جلسہ کے انتظامات میں سرکاری خزانہ سے ایک روپیہ بھی خرچ نہیں کیا جائے گا۔ جلسہ میں جمیعت علما اسلام کے امیر مولانا فضل الرحمن،پاکستان مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز، چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری کے علاوہ دیگر جماعتوں کے قائدین بھی شریک ہوں گے۔ جبکہ صدر پاکستان کی جانب سے آزادجموں وکشمیر قانون ساز اسمبلی میں خطاب بھی متوقع ہے۔ پاکستان کی ساری سیاسی قیادت کا مقبوضہ کشمیر کے حوالہ سے متحد ہو کر یکجہتی کا اظہار کرنا مقبوضہ کشمیر کے بھائیوں کے لیے مثبت پیغام ثابت ہو گا۔ 05 فرور ی کے دن ساری سیاسی قیادت متحد ہو کر یہ پیغام دینا چاہتی ہے کہ وحدت کشمیر پر کوئی سمجھوتہ نہیں کریں گے اور تقسیم کشمیر کی ہر سازش کو نا کام بنائیں گے۔ اگر کشمیر کی حیثیت میں کمی کرنے کی سازش کی گئی تو اسے مل کر نا کام بنائیں گے۔ تمام سیاسی جماعتوں کے کارکنوں اور عوام سے اپیل ہے کہ وہ اس یکجہتی جلسہ میں بھرپور شرکت کو یقینی بنائیں۔
ان خیالات کا اظہار انہوں نے بدھ کے روز ایوان وزیراعظم میں وزیرتعلیم بیرسٹرافتخار گیلانی، جمیعت علما اسلام کے جنرل سیکرٹری مولانا امتیاز عباسی، راجہ امداد علی طارق، عبدالخالق وصی، مولانا سید عدنان، مولانا عبدالماجد اور ملک ذوالفقار کے ہمراہ 05 فروری یوم یکجہتی کشمیر کے حوالہ سے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت ہندوستان مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین پامالیوں کا مرتکب ہو رہا ہے۔ 05 فروری کے دن ہمیں مل کر مقبوضہ کشمیر کے عوام کے ساتھ بھرپور یکجہتی کا پیغام دینا ہے۔ ہم اپوزیشن کی تمام سیاسی جماعتوں کو کشمیر یوں کے ساتھ یکجہتی کے لیے مظفرآباد آنے پر خوش آمدید کہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر یوں کے لیے یہ امر خوش آئند ہے کہ پاکستان کے عوام سیاسی نظریات کو بالائے طاق رکھ کر کشمیر کے حوالے سے متحد ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ(ن)یکجہتی کشمیر جلسہ کی بھرپورانداز میزبانی کرے گی تاکہ مقبوضہ کشمیر میں ہندوستان کے ظلم و ستم کو بے نقاب کیا جا سکے۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے جمیعت علما اسلام آزادکشمیر کے جنرل سیکرٹری مولانا امتیاز عباسی نے کہا کہ 05 اگست 2019 کے بعد 05 فروری کے دن کی اہمیت میں اور بھی اضافہ ہو گیا ہے۔ 05 فروری کے دن سب سیاسی جماعتیں اکٹھی ہوکر مقبوضہ کشمیر کے عوام کو بھرپور یکجہتی کا پیغام دیں گی۔اس حوالہ سے میڈیا بھی اپنا بھرپور کردا ر ادا کرے اور ہندوستان کے عزائم کو بے نقاب کرے تاکہ عالمی انسانی حقوق کے ادارے، او آئی سی، اقوام متحدہ اور عالمی تھینک ٹینکس اس طرف توجہ دیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم یک زبان ہو کر تقسیم کشمیر کے خلاف ہر قسم کی سازش کو ناکام بنائیں گے اور پورے جذبے کے ساتھ وحدت کشمیر کا دفاع کریں گے۔ وزیر تعلیم بیرسٹر افتخار گیلانی نے کہا کہ اس سال 05 فروری یکجہتی کشمیر کا جلسہ آزادکشمیر کی تاریخ کا سب سے بڑا جلسہ ہو گا۔ یہ جلسہ یونیورسٹی گراونڈ میں منعقد ہو گا جس میں مولانا فضل الرحمن، مریم نوا ز، بلاول بھٹو زرداری، شاہد خاقان عباسی، راجہ پرویز اشرف، امیر حیدر ہوتی، سردار اختر مینگل، ڈاکٹر عبدالمالک بلوچ، آفتاب شیر پا، شاہ اویس نورانی، سینٹر ساجد میر اور دیگر قائدین شریک ہوں گے۔ آزادجموں وکشمیر قانون ساز اسمبلی کے اجلاس کے فوراقائدین جلسہ گاہ پہنچیں گے جبکہ نماز جمعہ کے بعد جلسہ کا باقاعدہ آغاز ہو جائے گا۔ قائدین کی مظفرآبا د آمد کا سلسلہ 04 فروری کی رات سے شروع ہو جائے گا۔
واپس کریں