آزاد کشمیر میں عوام کو معیاری آٹا فراہم کرنے کے لئے آزاد کشمیر حکومت کا اہم اقدام،بھاری سبسڈی دینے کا فیصلہ
No image مظفرآباد (11جون2021) ترجمان محکمہ خوراک کی جانب سے جاری ہونے والی پریس ریلیز کے مطابق وزیر اعظم آزادجموں وکشمیر راجہ محمد فاروق حیدر خان کی خصوصی ہدایت پر محکمہ خوراک نے آزادکشمیر کی عوام کو ریلیف مہیا کرنے کی خاطر بھاری سبسڈی برداشت کرتے ہوئے انہیں معیاری اور سستا آٹا فراہم کیا۔ رواں مالی سال کے ابتداء سے ہی پاکستان میں گندم و آٹا کا بحران پیدا ہو گیا جس کے باعث آزادکشمیر کی اوپن مارکیٹ میں آٹا بہت مہنگا ہو گیا تو حکومت آزادکشمیر و محکمہ خوراک نے عوام کو سہولت دینے کے لیے سرکاری آٹا کے کوٹہ میں اضافہ کر دیا۔ جبکہ محکمہ خوراک کو رواں مالی سال کے لیے ابتدائی بجٹ میں صرف 2027.000ملین روپے سبسڈی میں مہیا ہوئے تھے لیکن عوام کو آٹا کے اضافی کوٹہ کی فراہمی اور پاسکو کی جانب سے ملکی گندم کے بجائے مہنگی غیر ملکی گندم مہیا ہونے کی وجہ سے سبسڈی کا حجم بڑھ کر 6292.000ملین روپے تک پہنچ گیا، جس کی وجہ سے پاسکو اور مقامی ٹھیکیداروں کے بھاری بلات زیر التواء ہو گئے۔ لیکن حکومت پاکستان کے تعاون اور وزیراعظم آزادحکومت ریاست جموں وکشمیر کی خصوصی ذاتی دلچسپی کے باعث محکمہ کو نظر ثانی بجٹ میں 4265.000ملین روپے اضافی مہیا کر دیئے گئے ہیں، جس کی وجہ سے پاسکواور مقامی ٹھیکیدار وں کے تمام بقایا جات ادا کیے جار ہے ہیں، جو موجودہ حکومت کی بہت بڑی کامیابی ہے۔ ان بقایا جات کی ادائیگی سے آئندہ مالی سال کے بجٹ پر کوئی اضافی بوجھ نہیں پڑے گا اور عوام کو معیاری آٹا کی تسلسل کے ساتھ فراہمی بھی یقینی بنائی جا سکے گی۔

واپس کریں